The news is by your side.

Advertisement

طالبات سے ہراسانی کا واقعہ، 7جامعات کے وائس چانسلرز تبدیل

پشاور : گومل یونیورسٹی میں طالبات سے ہراسانی واقعے کے بعد خیبر پختونخوا کی 7جامعات کے وائس چانسلرز تبدیل کردیئے گئے۔

تفصیلات کے مطابق خیبر پختونخوا کی 7جامعات کے وائس چانسلرز کو تبدیل کردیا گیا ، گومل یونیورسٹی میں طالبات سے ہراسانی واقعے کے بعد تبادلے کیے گئے ہیں۔

ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے نوٹیفکیشن جاری کردیے ہیں ، نوٹیفکیشن کے مطابق ڈاکٹر افتخار احمد کو وائس چانسلر گومل یونیورسٹی تعینات کردیا گیا جبکہ ویمن یونیورسٹی صوابی،یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی مردان ، خوشحال خان یونیورسٹی،یونیورسٹی آف ایگریکلچر ڈی آئی خان کے وائس چانسلرز بھی تبدیل کئے گئے ہیں۔

لکی مروت، ایبٹ آباد، اور ہزارہ یونیورسٹی میں بھی نئے وائس چانسلرز تعینات کر دیئے گئے ہیں۔

مزید پڑھیں : طالبات کو ہراساں کرنے میں ملوث پروفیسر نوکری سے برخاست

یاد رہے گذشتہ ماہ اے آر وائی نیوز کی ٹیم سرعام نے ڈیرہ اسماعیل خان میں گومل یونیورسٹی پر چھاپہ مار کر طالبات کو ہراساں کرنے والے پروفیسر صلاح الدین کو نوکری سے برخاست کروادیا تھا ۔

پروفیسر صلاح الدین طالبات کو نمبر کم کرانے کی دھمکی دے کر ہراساں کرتا تھااور خواتین اساتذہ سے بھی دست درازی کرچکا ہے۔

نمائندہ اے آر وائی نیوز اقرار الحسن کے مطابق ملزم کے خلاف جنسی ہراسگی کی مسلسل شکایات کے باوجود کوئی کارروائی نہیں کی گئی تھی۔

ٹیم سرعام نے ملزم پروفیسر کے خلاف تمام ویڈیو اور شواہد حاصل کیے جس کے بعد اسے نوکری سے برخاست کردیا گیا تھا۔

رپورٹ کے مطابق پروفیسر صلاح الدین کی 35 سال کی سروس ہے اور یہ ملزم ڈین آف آرٹس تھے اور یونیورسٹی کا سب سے بڑا عہدہ ان کے پاس تھا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں