The news is by your side.

Advertisement

بھارت خیالی راگ چھوڑ کر حقیقت کی دنیا میں آئے، وزیرِ خارجہ

واشنگٹن: وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بھارت خام خیالی پر مبنی دہشت گردی کا راگ نہ الاپے، بھارت کو خیالی راگ چھوڑ کر حقیقت کی دنیا میں آنا پڑے گا۔

واشنگٹن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ حکومت نے خطے کی ترقی کے لیے بھارت سے مذاکرات کی کوشش کی، دیکھنا ہوگا امن کی بات کون کر رہا ہے اور کون فرار کے راستے پر ہے۔

امریکا جو کہتا ہے کہے ہم سنیں گے لیکن امریکا کے پابند نہیں: وزیر خارجہ

انھوں نے کہا بھارت نے ملاقات پر آمادگی ظاہر کی تھی، لیکن پھر اپنے اندرونی معاملات سے توجہ ہٹانے کے لیے ایسی صورتِ حال پیدا کی گئی، بھارتی رویہ سفارتی آداب کے منافی ہے، بھارت انسانیت کا ماحول بہتر کرنے سے کترا رہا ہے۔

وزیرِ خارجہ نے کہا کہ سعودی ولیٔ عہد سے نیو یارک میں ملاقات ہوگی، اکتوبر میں سعودی عرب اور یو اے ای حکام انویسٹمنٹ کا جائزہ لینے پاکستان آئیں گے، ہم سایہ ممالک سے بہتر تعلقات پاکستان کی پالیسی ہے۔

شاہ محمود نے بھارت کی طرف امریکی جھکاؤ پر کہا کہ امریکا خطے میں بھارت کو اسٹریٹیجک پارٹنر بنانے کی خواہش رکھتا ہے، جب کہ اسے ہمیشہ پاکستان سے تعلقات میں فائدہ ہوا، ہمیں امریکا سے تعلقات کو مینیج کرنا ہے، بھارت گھبراتا ہے، ہم نہیں گھبرائیں گے۔


یہ بھی پڑھیں:  امریکا کے ساتھ باہمی احترام پر مبنی تعلقات چاہتے ہیں، شاہ محمود قریشی


انھوں نے کہا کہ بھارت نے مذاکرات کی دعوت پر دہشت گردی کا راگ الاپا، مقبوضہ کشمیر میں لاکھوں نہتے لوگ حق خود ارادیت کی آواز بلند کر رہے ہیں، کشمیر کے معاملے پر بھارت یو این قرارداد آنکھیں چرا رہا ہے، بھارت میں دانشور کہہ رہے ہیں کہ ان کی کشمیر پالیسی نا کام ہو چکی ہے، بھارت کو اپنے گریبان میں جھانکنا چاہیے۔

وزیرِ خارجہ نے کشمیر کے حوالے سے کہا کہ کشمیریوں سے رائے لے لیں اگر وہ چاہتے ہیں ’کشمیر بنے گا پاکستان تو پھر بنے گا‘۔

وزیرِ خارجہ نے کہا ’امریکا جو کہتا ہے کہے ہم سنیں گے لیکن امریکا کے پابند نہیں، پاکستان کی ترجیحات، مفادات اور ضروریات مدِ نظر رکھیں گے۔

انھوں نے کہا ’ہم چاہتے ہیں افغانستان میں جو بیٹھے ہیں وہ ہتھیار پھینک کر میز پر بیٹھیں، حکمران بھی اپنی سوچ پر نظرِ ثانی کریں، ہتھیار اٹھانے والے بھی افغان ہی ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں