The news is by your side.

Advertisement

بھارت کشمیر کی حیثیت تبدیل نہیں کرسکتا، کسی صورت قبول نہیں کریں گے، شاہ محمود قریشی

اسلام آباد : وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو تبدیل نہیں کرسکتا، اس قدم کو کسی صورت قبول نہیں کریں گے، یو این سیکریٹری جنرل سے گزارش کی ہے کہ وہ اپنا کردار ادا کریں۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں میزبان کاشف عباسی سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ بھارتی پارلیمنٹ میں ایک صدارتی حکم نامے کے ذریعے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے اس اقدام کو کسی صورت قبول نہیں کریں گے۔

مودی مقبوضہ کشمیر میں ہندوتوا کی سوچ مسلط کرنا چاہتا ہے، بھارت کا کشمیر سے متعلق صدارتی حکم ایک کاغذ کا ٹکڑا ہے، بھارت نے ایک آرڈیننس کے ذریعے کشمیریوں کو یرغمال بنانے کی کوشش کی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ بھارت مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو تبدیل نہیں کرسکتا، صدر ٹرمپ نے کہا تھا کہ ثالثی کیلئے تیار ہوں جسے بھارت نے مسترد کردیا۔

بھارت نے جو حرکت کی اس سے شملہ معاہدے کی دھجیاں اڑادی ہیں۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے بھی صورت حال پر تشویش کا اظہار کیا ہے، بھارت کی حرکت سے خدشہ ہے خطے کا امن متا ثر ہوگا۔

ایک سوال کے جواب میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہماری لیگل پوزیشن واضح اور مضبوط ہے، ہم اپنی آواز کے ذریعے دنیا کے ضمیر کو جھنجھوڑیں گے۔

اشارے مل رہے تھے کہ بھارت بڑی حرکت کرنے جارہاہے، اسی لیے یو این سیکریٹری جنرل کو اس فیصلے سے پہلے خدشات کا اظہار کیا تھا، یواین سیکریٹری جنرل کو گزارش کی کہ وہ اپنا کردار ادا کریں۔ بھارت جو چال چل رہا ہے کیا دنیا اس سے بھی لاتعلق رہنا چاہتی ہے، بھارت افغان امن عمل کیخلاف چال چل رہا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں