The news is by your side.

Advertisement

وزیرخارجہ نے پاک بھارت تعلقات میں‌ بہتری کو مسئلہ کشمیر کے حل سے مشروط قرار دے دیا

اسلام آباد:‌ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا  ہے کہ کشمیر ہماری خارجہ پالیسی کا مرکزی نکتہ ہے، ایک دن کشمیر پاکستان کا حصہ بنے گا.

ان خیالات کا اظہار انھوں نے نیشنل پریس کلب میں کشمیر سے متعلق سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا.

انھوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیرکے حل کے لئے قومی اتفاق رائے موجود ہے، سیاسی تفریق سے بالاتر ہوکر سب متفق ہیں اور رہیں گے.

ان کا کہنا تھا کہ اقوام متحدہ میں خطاب کی حوصلہ افزائی پر ممنون ہوں، او آئی سی میں بھی کشمیر کے معاملے پرمؤثر نشست ہوئی، ترک، آذربائیجان کے وزرائے خارجہ نے مؤثرموقف پیش کیا، کشمیرپر پاکستان کے مؤقف میں کوئی ابہام یادوسری رائے نہیں.


مزید پڑھیں: مسئلہ کشمیر 7 دہائیوں سے حل طلب اور سیکیورٹی کونسل چپ ہے: وزیر خارجہ


شاہ محمود قریشی نے کہا کہ تقسیم کے بنیادی اصول کے مطابق کشمیربھارت کا حصہ نہیں بنتا، طے ہوا تھا مسلم اکثریتی علاقے پاکستان کا حصہ ہوں گے.

وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ مسئلہ کشمیرپردو جنگیں ہوئیں، اس تحریک میں بہت لہو شامل ہو چکا، ہندوستان کے ساتھ اچھے ہمسایوں والے تعلقات چاہتے ہیں. البتہ تعلقات میں بنیادی رکاوٹ مسئلہ کشمیر ہے، مسئلہ کشمیر کے حل کےبغیر تعلقات کشیدہ رہیں گے.

اس موقع پر انھوں‌ نے مسئلہ کشمیر  اجاگر کرنے کے لئے نوابزادہ نصراللہ مرحوم اور قاضی حسین احمد مرحوم کے کردار کو سراہا.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں