The news is by your side.

Advertisement

‘نواز شریف نے شہباز کو مستعفی ہونے کا کہا لیکن زرداری راضی نہیں’

پشاور : پاکستان تحریک انصاف کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ نواز شریف شہباز شریف کو مستعفی ہونے کا کہہ چکے ہیں ٓلیکن زرداری راضی نہیں ، وہ شہباز شریف کو دھمکا رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی نے گھروں پر چھاپوں اور گرفتاریوں کے حوالے سے اے آر وائی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا حکومت بوکھلاہٹ کاشکارہے،انکوسمجھ نہیں آرہی کیاکریں، ایک طبقہ کہتا ہے مارچ کو کچل دیں، دوسرا کہہ رہا ہے وقوفی ہوگی، یہ غلطی پر غلطی کر رہے ہیں

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم کے اندر دراڑ ہے، اطلاعات کے مطابق نواز شریف اور شہبازشریف سے کہہ چکے مستعفی ہوجائیں لیکن پیپلزپارٹی ایسا نہیں ہونے دے رہی،وہ شہباز شریف کو دھمکا رہی ہے کہ اگر ایسا کیا تو ہم لاتعلق ہوجائیں گے۔

پی ٹی آئی وائس چیئرمین نے کہا کہ نوازشریف،مریم نواز کی سوچ ہے وہ دن بدن اپنی ساکھ کھو رہےہیں، وہ سمجھتےہیں کہ ان کا بیانیہ عوام میں ناکام ہورہاہے، ن لیگ سمجھتی ہےکہ اسے اپنا ٹرم مکمل کرنا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ سمجھتےہیں کہ پی ٹی آئی کو طاقت کےزورپرکچل سکتےہیں، ہماری تحریک ایک قومی موومنٹ کا روپ دھارچکی ہے، وکلا،ڈاکٹرز،انجینئرز،طلبا،علماسمیت سب شامل ہوچکےہیں۔

پنجاب کی صورتحال کے حوالے سے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پنجاب میں اس وقت گورنربھی نہیں ہے، پوسٹنگ،ٹرانسفراس وقت حمزہ شہباز کررہے ہیں، پنجاب کی بیوروکریسی ان کےغیرقانونی احکامات مان رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ پی ٹی آئی قیادت کوگرفتارکر لیتے ہیں، ہوسکتاہےوہ عمران خان کواسلام آبادمیں داخل نہ ہونےدیں لیکن کے پی سے اتنا بڑا ریلا آئے گا کہ یہ ان کو روک نہیں پائین گے ، ہم نے تصادم نہیں کرنا،قانون ہاتھ میں نہیں لینا، ہم نے پرامن رہناہے،قانونی وآئینی حق سلب نہیں ہونےدینا۔

آزادی مارچ سے متعلق رہنما پی ٹی آئی نے کہا کہ پرامن مارچ ہمارا قانونی اور آئینی حق ہے، عدالت سےرجوع کیاہےامیدہےمارچ کی اجازت دی جائے گی ، شرارتی عناصرپرامن مارچ میں خلل پیداکرناچاہیں گے اور بیرونی عناصرپاکستان کوغیرمستحکم کرناچاہیں گے۔

زارداری کے حوالے سے شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ الیکشن کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ آصف زرداری ہیں، زرداری کو دکھائی دے رہا ہے الیکشن ہوئے تو انہیں حاصل کچھ نہ ہوگا، پیپلزپارٹی اندرون سندھ تک محدود ہوگئی ہے، نوجوان طبقہ پی پی کی حکومت سے تنگ آچکا ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ ایسےعناصربھی ہیں جوچاہیں گےاتنی خرابی ہوکہ کوئی تیسری قوت آجائے لیکن ہم نے پرامن رہنا ہے،اپنے مقصد سے پیچھے نہیں ہٹنا اور بیرونی اوراندرونی غلامی قبول نہیں کرنی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں