The news is by your side.

Advertisement

نیب کا اصل چہرہ کل بے نقاب کروں گا، شہبازشریف

لاہور: وزیراعلٰی پنجاب شہباز شریف نے کہا ہے کہ نیب کا اصل چہرہ عوام کے سامنے کل بے نقاب اور عوام کے سامنے حقائق رکھوں گا، جن لوگوں کے کراچی تا گلگت بلتستان کرپشن کے چرچے ہیں انہیں آج تک قومی احتساب بیورو نے طلب نہیں کیا۔

لاہور میں باب پاکستان منصوبے کے افتتاح کے موقع پر جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلٰی شہباز شریف قومی احتساب بیورو پر بھڑاس نکالتے ہوئے کہا کہ ’ابھی فیصلہ نہیں کیا نیب کو اپنی میزبانی کا شرف بخشوں گا یا نہیں، نوازشریف کے گھر تک سڑک بنانے پر مجھے نوٹس بھیجنے والے ادارے کے سربراہ بتائیں کہ اُن کے گھر کے قریب کیا کوئی سڑک موجود نہیں ہے‘۔

شہبازشریف کا کہنا تھا کہ نیب کا اصل چہرہ کیا ہے اس کا پردہ کل میڈیا کو بلا کر فاش کروں گا اور حقائق بیان کروں گا، زرداری کی کرپشن کے قصے کراچی سے گلگت بلتستان تک موجود ہیں مگر انہیں آج تک قومی احتساب بیورو نے کبھی طلب نہیں کیا۔

مزید پڑھیں: پی ٹی آئی کی وجہ سےاورنج لائن منصوبےمیں تاخیرہوئی ‘ شہبازشریف

وزیراعلیٰ پنجاب کا کہنا تھا کہ زرداری صاحب نے جو عوام کا پیسہ لوٹ کر دولت بنائی اُسے آخری کونے سے بھی واپس لائیں گے اور رہی بات عمران خان کی تو وہ گالیوں کے علاوہ کوئی بات نہیں کرتے، میں نے تحریک انصاف کے سربراہ کو ہرجانے کا نوٹس بھیجا مگر انہوں نے عدالتوں  سے بچنے کے لیے درخواست دائر کیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ عمران خان نے بلند و بانگ دعوے تو کیے مگر خیبرپختونخواہ کے لیے کچھ نہیں کیا، جن لوگوں نے ترقیاتی منصوبوں کے عوض وفاق سے رقم نہ لینے کا اعلان کیا وہ اب بیرونی قرضے حاصل کررہے ہیں۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ آج باب پاکستان منصوبے کا افتتاح کررہے ہیں، یہاں اسپورٹس کے ساتھ سوئمنگ پول بھی ہوگا جس سے عوام محظوظ ہوسکیں گے، اگر کراچی، پشاور اور کوئٹہ کے لوگوں نے مسلم لیگ ن کو موقع فراہم کیا تو ہم وہاں بھی لاہور جیسے ترقیاتی منصوبے بنائیں گے کیونکہ خدمت ہی ہماری سیاست کا منشور ہے۔

یہ بھی پڑھیں: عوام دھرنے والوں کے عزائم خاک میں ملا دیں گے، شہبازشریف

اُن کا مزید کہنا تھا کہ مال روڈپرحکومت گرانے اورملک میں افراتفری کی کوششیں کی گئیں، دھرنے میں شامل ہونے والے وہ لوگ تھے جو اپنے صوبوں میں عوام کی مدد نہیں کرتے، انسان تو انسان بلکہ آسمان بھی اس بات کی گواہی دے رہا ہے کہ یہ ’گالیاں دینے والے لوگ ہیں‘۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں