The news is by your side.

Advertisement

صاف پانی کمپنی اسکینڈل : شہباز شریف کی داماد سے متعلق سوال پر خاموشی اور برہمی

لاہور : سابق وزیر اعلیٰ شہباز شریف نیب عدالت میں پیشی کے موقع پر داماد سے متعلق سوال پر برہم ہوگئے، ان کا کہنا تھا کہ کسی افسر نے میرے رشتے دار کو خود شامل کیا تو میں نہیں جانتا، اندرونی کہانی اے آر وائی نیوز نے حاصل کرلی۔

تفصیلات کے مطابق صاف پانی کمپنی اسکینڈل کیس کی سماعت ہوئی جس میں سابق وزیر اعلیٰ پنجاب اور نون لیگ کے صدر شہباز شریف بذات خود پیش ہوئے۔

سماعت کے دوران نیب افسر نے سوال کیا کہ کیا آپ کو صاف پانی پروجیکٹ میں اپنے داماد کی مداخلت کا علم تھا؟ نیب افسر کے سوال پر شہبازشریف جواب دینے کے بجائےخاموش رہے پھر دوسری بار جب افسر نے داماد کے بجائے اس کا نام علی عمران کہا تو شہبازشریف نے جواب دیا کہ کون کہاں مداخلت کررہا ہے بطور وزیراعلیٰ میں نہیں جانتا۔

نیب افسر نے استفسار کیا کہ داماد کی مداخلت تو آپ کی مرضی کے بغیر ممکن نہیں ہوسکتی، ذرائع کے مطابق اس سوال کے جواب میں شہبازشریف نے غصہ کا اظہار کیا لیکن بعد میں معذرت بھی کرلی۔ شہباز شریف کا کہنا تھا کہ اگر کسی افسر نے میرے کسی رشتےدار کو خود شامل کیا ہو تو میں نہیں جانتا۔

واضح رہے کہ شہباز شریف کو5جولائی کو طلب کیا گیا تھا لیکن الیکشن مصروفیات کے باعث وہ ایک دن پہلے ہی لاہور نیب آفس میں پیش ہوگئے، سابق وزیراعلیٰ پنجاب سے نیب دفتر میں دو گھنٹے سوال جواب ہوئے۔

مزید پڑھیں : صاف پانی کمپنی اسکینڈل، نیب نے شہباز شریف کو پانچ جولائی کو دوبارہ طلب کرلیا

نیب نے شہباز شریف کو یہ ہدایات دی تھیں کہ وہ اپنے ساتھ صاف پانی کمپنی کے تمام افسران کی تنخواہوں اور مراعات کا ریکارڈ لے کر آئیں اور نیب میں اپنی حاضری کو یقینی بنائیں بصورت دیگر ان کے خلاف قانونی کارروائی کی جا سکتی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں