بدقسمتی سے جس سیل میں رکھا گیا وہاں لائٹ،کھڑکی نہیں ،شہبازشریف
The news is by your side.

Advertisement

بدقسمتی سے جس سیل میں رکھا گیا وہاں لائٹ،کھڑکی نہیں ،شہباز شریف

اسلام آباد : اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے کہا بدقسمتی سے جس سیل میں رکھا گیا وہاں لائٹ،کھڑکی نہیں، عقوبت خانے سے باہر نکلے بغیر دن،رات کا بھی پتہ نہیں چلتا۔

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا بدقسمتی سے جس سیل میں رکھا گیا وہاں لائٹ،کھڑکی نہیں ، نیب میں تمام لوگوں کو ایسے ہی رکھا جاتا ہے۔

شہبازشریف کا کہنا تھا کہ بھائیوں میں تقسیم کے حوالے سے باتیں 20سال سے ہو رہی ہیں، غلام اسحاق اورپروزمشرف سمیت کئی لوگوں نےباتیں کیں، اشفاق کیانی نےاپنےبھائی کاکنٹریکٹ منسوخ کرنے پربات نہیں کی۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ میرے خیال میں ضمنی الیکشن میں دباؤ میں لانے کیلئے گرفتاری کی گئی ،24 گھنٹے لاک اپ میں رکھا جاتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ عقوبت خانے کی کوئی کھڑکی ہےنہ ہوا آسکتی ہے، عقوبت خانے سے باہر نکلےبغیردن،رات کابھی پتہ نہیں چلتا ، آشیانہ اسکیم سےمتعلق سوال کاجواب میں پارلیمنٹ میں دے چکا ہوں۔

یاد رہے اس سے قبل قومی اسمبلی اجلاس میں شہبازشریف نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا تھا کہ میں پاکستان تحریک انصاف اور نیب کے اتحاد پر بات کرنا چاہتا ہوں، ن لیگ کے لیڈرز کے خلاف 13 مئی کو دہشت گردی کے پرچے کاٹے گئے۔ ہمارے خلاف دہشت گردی کی دفعات کے تحت پرچے درج ہوئے۔

مزید پڑھیں : قومی اسمبلی اجلاس: شہباز شریف کے اداروں پر بھرپور الزامات

ان کا کہنا تھا کہ نیب میں حاضریاں اور گرفتاریاں ن لیگی اراکین کی ہوئیں۔ چیئرمین نیب نے میری گرفتاری کے آرڈرز 6 سے 13 جولائی کے درمیان دیا تھا۔ ’شیخ رشید نے ایسے ہی تو نہیں کہا تھا کہ شہباز شریف جیل کی ہوا کھائے گا۔

انہوں نے کہا تھا کہ ضمنی الیکشن کے دوران میری گرفتاری کے مؤخر فیصلے پر عملدر آمد کیا گیا۔ ایسا کبھی نہیں ہوا کہ دو ماہ میں اتنی بڑی تبدیلی آجائے، ’عام الیکشن جعلی تھے یا ضمنی انتخابات کے نتائج جعلی ہیں‘۔

شہباز شریف نے مزید کہا تھا کہ فیصلہ ایوان نے کرنا ہے وہی جنگل کا قانون ہوگا۔ ہٹلر کا انجام یاد رکھنا چاہیئے، نیب کے عقوبت خانے میں ہوا کا گزر نہیں، سورج نظر نہیں آتا۔ سیاست دان سختیاں برداشت کرتا ہے اور کرتا رہے گا۔ جنہوں نے تعلیم کا معرکہ عبور کیا انہی کو ہتھکڑیاں لگائی گئیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں