The news is by your side.

Advertisement

صدر پاکستان کا نیب ترمیمی بل پر اعتراض، شاہد خاقان عباسی کی کڑی تنقید

اسلام آباد : مسلم لیگ ن کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے قومی احتساب ترمیمی بل بغیر دستخط واپس کرنے پر صدر پاکستان پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ملک کا صدر پارٹی کارکن بنے گا تو پھر نظام کیسے چلے گا۔

تفصیلات کے مطابق نیب کورٹ اسلام آباد کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنما شاہدخاقان عباسی نے کہا کہ پارلیمان سےمنظوربل درست نظرنہ آناسمجھ سےبالاہے، ملک کا صدر پارلیمان کی نفی کرنے پر مجبور ہے۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ ملک کا صدر پارٹی کارکن بنے گا تو پھر نظام کیسے چلے گا، عارف علوی پی ٹی آئی کی ٹوپی اتاریں اورصدرکی ٹوپی پہنیں۔

ن لیگی رہنما نے کہا کہ صدر نے پی ٹی آئی دورمیں کبھی چیئرمین نیب کوبلاکرپوچھ گچھ کی، گزشتہ حکومت کوآج ہرقانون میں خرابی نظرآرہی ہے،، نیب قانون میں بیشترترامیم گزشتہ حکومت نے کیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ملک کے صدر کو کہنا چاہیے نیب انصاف کے تقاضے پورے نہیں کرسکا اور نیب کا ادارہ سیاسی جوڑتوڑ کے لیےاستعمال ہوتارہا، نیب میں ہرکیس جھوٹا ہوتا ہے۔

نیب کے حوالے سے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ نیب نےملک کوختم کردیا ، نیب کے ہوتے ہوئے ملک نہیں چلے گا، اس دارے کو ختم ہونا چاہیے۔

عمران خان سے متعلق ن لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ عمران خان کوملنی والی قتل کی دھمکی پرحکومت اُن کو مکمل سیکیورٹی فراہم کرے گی، پہلےبھی عمران خان کے خلاف سازشیں ہوئی لیکن ان سازشیوں کا کوئی ثبوت نہیں۔

گزشتہ حکومت نےتوانائی کی ضروریات پوری کرنےکےلیےمنصوبہ بندی نہیں کی، بجلی کےمعاملےکوکم سےکم لوڈشیڈنگ کرکےسنبھالیں گے،

Comments

یہ بھی پڑھیں