site
stats
پاکستان

نئے وزیراعظم کا انتخاب، جوڑ توڑ شروع، شاہد خاقان کی فضل الرحمان سے ملاقات

اسلام آباد : مسلم لیگ (ن) کے امیدوار برائے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ ریفرنس دائر کرنے والے ایک نہیں 10 ریفرنس دائرکریں میں کسی ریفرنس سےنہیں ڈرتا۔

یہ بات انہوں نے مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی، ملاقات میں شاہد خاقان عباسی اور مولانا فضل الرحمان کے درمیان سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد پیدا ہونے والی صورت حال اور مستقبل کے منظر نامے پر تبادلہ خیال ہوا۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ عالمی سازشوں سے وطن عزیزکو نکالنا ہماری بڑی ذمہ داری ہے ہم نے وہی کیا جس کی توقع بھی نہیں تھی اپنے مؤقف کی وضاحت کی ہے اور ہمارا مؤقف ملک کے لیے ہے۔

انہوں نے کہا کہ نوازشریف نے جمہوریت کے تسلسل کے لیے اہم فیصلہ کیا ہے جس پر ہم نے پارلیمانی پارٹی کا اجلاس بلا لیا گیا ہے۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ ترقی کا سفررک نہ جائے بلکہ اور تیزی سے آگے بڑھتا رہے اس کے لیے مسلم لیگ (ن) کے ساتھ ہیں۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ نے جو فیصلہ دیا ہے ہم نے من وعن قبول بھی کیا ہے تاہم سپریم کورٹ کے فیصلے کوعوام نے قبول نہیں کیا ہے اورنہ ہی عالمی سطح پر فیصلے کو قبول کیا گیا ہے۔

نواز شریف کی نااہلی کے بعد مسلم لیگ (ن) کے وزیراعظم کےعہدے کے لیے امیداوارشاہد خاقان عباسی نے کہا کہ اعجازالحق سے بات ہوئی ہے وہ میرے تجویزکنندہ بننا چاہتے ہیں جبکہ جو جماعتیں ہماری اتحادی ہوسکتی ہیں ان سے بھی ضرور بات کریں گے۔

ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ ریفرنس دائرکرنے والے ایک نہیں 10 ریفرنس دائرکریں مجھے کوئی ڈر نہیں ہے کیوں کہ مجھ پرکرپشن کا کوئی الزام نہیں ہے چوہدری نثارمسلم لیگ (ن) کا حصہ اور رہیں گے۔

چوہدری نثار کی مناسبت سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کاحصہ ہیں اوررہیں گے اور اقامہ رکھنا جرم نہیں ہوتا ہے، پاکستان میں فریقین نہیں سب ملک کے لیے کام کرتے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top