شاہد خاقان عباسی عبوری اور شہباز شریف مستقل وزیراعظم نامزد -
The news is by your side.

Advertisement

شاہد خاقان عباسی عبوری اور شہباز شریف مستقل وزیراعظم نامزد

اسلام آباد : مسلم لیگ ن نے شاہد خاقان عباسی کو عبوری وزیراعظم کیلئے نامزد کردیا جبکہ مستقل وزیراعظم شہبازشریف ہونگے۔

تفصیلات کے مطابق نواز شریف کی نا اہلی کے بعد سابق وزیراعظم کی زیرصدارت غیر رسمی مشاورتی اجلاس ہوا، جس میں عبوری وزیر اعظم کے لیے شاہد خاقان عباسی کے نام کی منظوری دیدی جبکہ شہبازشریف کو مستقل وزیراعظم بنانے کا فیصلہ کیا گیا ، نوازشریف کچھ دیر میں باقاعدہ اعلان کرینگے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق شاہد خاقان عباسی کو 45دنوں کے لیے وزیر اعظم بنایا جائے گا، جس کے بعد مستقل طور پر شہباز شریف کو وزیر اعظم بنایا جائے گا۔

اجلاس میں  وزیراعلیٰ پنجاب شہبازشریف، سعد رفیق، عبدالقادر بلوچ،اسحاق ڈار،شاہد خاقان عباسی شریک ہوئے جبکہ اٹارنی جنرل اشتراوصاف اور بیرسٹرظفراللہ بھی موجود تھے۔

اجلاس میں نواز شریف کو دی گئی سزا کے تعین پر ریویو پٹیشن سمیت دیگرآپشن پرمشاورت کی گئی، بریفنگ کے بعد عدالتی فیصلے سے متعلق حکمت عملی طے کی جائے گی، اجلاس کے بعد نواز شریف نے مولانا فضل الرحمان سمیت حکومتی اتحادیوں کو فون کر کے عبوری اور مستقل وزیر اعظم کے ناموں پر اعتماد میں لیا۔

غیر رسمی اجلاس میں اتفاق کے بعد آج شام ہونے والے پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں شاہد خاقان عباسی کے نام کی توثیق کرائی جائے گی ۔

خیال رہے کہ پیڑولیم  وزیر شاہد خاقان عباسی نااہل وزیراعظم کے جیل کے بھی ساتھی رہے، شاہد خاقان عباسی پر متنازع ایل این جی ڈیل کا بھی الزام ہے 1999 میں نواز حکومت کا تختہ الٹنے جانے کے وقت شاہد خاقان چیئرمین پی آئی اے تھے، اور انہیں بھی میاں نواز شریف کے ساتھ ہی طیارہ سازش کیس میں گرفتار کر لیا گیا تھا۔

سال 2008گیلانی کے دور حکومت میں وہ وزیر تجارت رہے، گیلانی کے دور میں وہ دفاعی پیداوار کے وزیر بھی رہے، 1988 میں نیشنل اسمبلی کے ممبر منتخب ہوئے تھے جبکہ جون 2013 میں پیڑولیم کے وزیر بنے۔


مزید پڑھیں :  پاناما کیس: وزیراعظم نوازشریف نا اہل قرار


واضح رہے کہ پاناما کیس میں سپریم کورٹ نے نوازشریف کو نااہل قرار دیا تھا اور نواز شریف ، حسن، حسین، مریم نواز، کیپٹن صفدر اور اسحاق ڈار کے خلاف نیب میں ریفرنس بھیجنے اور چھ ماہ میں فیصلہ کرنے کا حکم دیا۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئرکریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں