The news is by your side.

Advertisement

اختلافات ختم ، سابق صوبائی وزیر شہرام ترکئی کو کابینہ میں دوبارہ شامل کرنے کا فیصلہ

پشاور : سابق صوبائی وزیر شہرام ترکئی کو کابینہ میں دوبارہ شامل کرنے کا فیصلہ کرلیا ، فیصلہ وزیراعظم کی ذاتی دلچسپی کے بعد کیا گیا، وزیراعلیٰ محمود خان کا کہنا ہے کہ غلط فہمیاں دور ہوگئیں، کسی سے کوئی ذاتی رنجش نہیں۔

تفصیلات کے مطابق سابق صوبائی وزیر شہرام ترکئی سے 5 ماہ بعد اختلافات ختم اور غلط فہمیاں دورکرلی گئیں، جس کے بعد شہرام ترکئی کو کابینہ میں دوبارہ شامل کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ۔

وزیراعظم کی ذاتی دلچسپی کےبعدشہرام ترکئی کوکابینہ میں شامل کرنیکا فیصلہ کیا، دوسرےمرحلےمیں سابق وزیرعاطف خان کو وزارت واپس دینے کیلئے لابنگ شروع کی جائے گی۔

وزیراعلیٰ محمود خان کا کہنا ہے کہ غلط فہمیاں دور ہوگئیں، کسی سے کوئی ذاتی رنجش نہیں،جوپارٹی ایجنڈےکی تکمیل کیلئے کام کرے گا، اس کی بھرپور عزت کریں گے۔

خیال رہے جنوری میں اختلافات کی بنیادپرشہرام ترکئی،محمدعاطف،شکیل احمد سے قلمدان لئےگئے تھے ، برطرف وزراپر کابینہ کے فیصلوں سے اختلاف اور پریشر گروپ بنانے کا الزام تھا۔

مزید پڑھیں : خیبر پختونخواہ کے 3 وزرا کو عہدوں سے ہٹا دیا گیا

ذرائع نے بتایا تھا کہ شہرام ترکئی اور محمدعاطف کی کارکردگی صوبائی حکومت کیلئے شرمندگی کی وجہ بنتی رہی، وزیراعلیٰ کی باربار توجہ دلوانے کےباوجود دونوں وزیر ٹس سے مس نہ ہوئے اور مسلسل ناکامیوں کے بعد وزیر اعلیٰ نے دونوں وزرا کو فار غ کیا، خالی محکموں کے لیے نئے وزرا کا تقرر جلد کر دیا جائے گا۔

عاطف خان وزیر کلچر، سیاحت اور کھیل کے وزیر تھے، شہرام خان ترکئی بطور صوبائی وزیر صحت کام کرر ہے تھے جبکہ شکیل احمد صوبائی وزیر برائے ریونیو کی ذمہ داریاں سرانجام دے رہے تھے۔

بعد ازاں وزیراعلیٰ کےپی نے حکومتی امور میں ڈسپلن معاملے پرمزید سختی کرنے کافیصلہ کرتے ہوئے کہا وزیر ہوں یا مشیر،سب کوپارٹی ڈسپلن کی پابندی کرناپڑےگی اور خیبرپختونخوامیں کابینہ ارکان کواپنی کارکردگی پرپہلےسےمزیدتوجہ دیناہوگی، صوبائی وزراکی کارکردگی کوبھی اعلیٰ سطح پر مانیٹر کیا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں