The news is by your side.

Advertisement

عمران خان کے ہوتے ہوئے سرکلر ٹرین نہ چلی تو قیامت تک نہیں چل سکے گی: شیخ رشید

کراچی: وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ اگر عمران خان کے ہوتے ہوئے سرکلر ٹرین نہ چلی تو قیامت تک نہیں چل سکے گی۔

شہرِ قائد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ سرکلر ریلوے کا ڈیزائن بنا ہے نہ اس کی فیزیبلٹی تیار ہوئی ہے، مرجاؤں گا لیکن جھوٹ نہیں بولوں گا، 9 سال سے جھوٹ بولنا چھوڑ دیا ہے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان ریلوے کا خسارہ بہت زیادہ ہے، ریلوے کے ملازمین کی تعداد ایک لاکھ ہے جب کہ ڈیڑھ لاکھ افراد کو پنشن دے رہے ہیں، اسی طرح ایم ایل ون میں بھی ڈیڑھ لاکھ افراد کو نوکریاں ملیں گی۔

انھوں نے کراچی سے پشاور 1760 کلو میٹر طویل ایم ایل ون منصوبے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان 27 اپریل 2019 کو اس سلسلے میں معاہدے پر دستخط کریں گے جس کے نتیجے میں کراچی سے پشاور کے لیے ایک نیا ڈبل ٹریک بچھایا جائے گا جس پر ٹرین کی کم سے کم رفتار 160 کلو میٹر ہوگی۔

یہ بھی پڑھیں:  کرپشن کے حق میں قانون بنانے والوں پر تنقید، وزیر اعظم نے لبرل فرانسیسی ماہر معاشیات کا حوالہ دے دیا

شیخ رشید نے کہا کہ کراچی سے پشاور ڈبل ٹریک کا منصوبہ اگلے 5 سالوں میں مکمل ہوگا، ایم ایل ون منصوبہ پاکستان کی تاریخ بدل دے گا، ہم چاہتے ہیں ایم ایل ٹو پر بھی کام شروع ہو جائے۔

وزیر ریلوے کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت نے منصوبے کے ڈیزائن اور فیزیبلٹی کی منظوری دینی ہے، اگر ہماری مدت اقتدار میں کے سی آر مکمل نہیں ہوتا تو پھر وہ کبھی بھی مکمل نہیں ہو پائے گا۔

یہ بھی پڑھیں:کراچی سرکلر ریلوے کے لیے اورنج ٹرین طرز پر پیکج کا مطالبہ کیا تھا: وزیر اعلیٰ سندھ

شیخ رشید نے کہا کہ جیسے ہی سندھ حکومت معاہدے پر دستخط کرے گی، پاکستان ریلویز منصوبے کے راستے میں آنے والی تجاوزات کا خاتمہ کر دے گی، کئی کمرشل تجاوزات کا پہلے ہی خاتمہ کیا جا چکا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ منصوبہ اب پاک چین اقتصادی راہ داری (سی پیک) اور گوادر پورٹ کا بھی حصہ بن گیا ہے۔

قبل ازیں وفاقی وزیر ریلوے نے کراچی سٹی اسٹیشن پر انجن میں آگ لگنے سے جاں بحق ہونے والے اسسٹنٹ ڈرائیور راشد رحمان کے گھر جا کر اہل خانہ سے تعزیت کی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں