The news is by your side.

Advertisement

مالکن کے تشدد کی شکار12 سالہ ملازمہ چائلڈ سیفٹی سیل پہنچ گئی

شیخو پورہ : پنجاب میں ایک اور ملازمہ مالکن کے تشدد کا شکار بن گئی، بارہ سالہ ملازمہ چائلڈ سیفٹی سیل پہنچ کر کام پر نہ جانے کیلئے رو رو کر دہائیاں دینے لگی۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب میں گھریلو ملازمین پر تشدد کے واقعات معمول بنتے جارہے ہیں، گھریلوملازمہ بچی پر تشدد کاایک اور واقعہ سامنے آگیا۔

مالکن اور اس کے بیٹوں کے بہیمانہ تشدد سے تنگ ہونے والی بارہ سال کی گھریلو ملازمہ نیلم گھر سے سودا لینے کے بہانے چائلڈ سیفٹی سیل پہنچ گئی۔

نیلم کا کہنا ہے کہ اس کی سوتیلی ماں نے72ہزار روپے کے عوض مالکن کو ایک سال کیلئے حوالے کیا، جہاں معمولی باتوں پر روز تشدد کیا جاتا ہے۔

پولیس کو بیان دیتے ہوئے نیلم نے الزام لگایا ہے کہ مالکن اوراس کے بیٹے معمولی باتوں پر تھپڑوں اور جوتوں سے مارتے پیٹتے ہیں، بارہ سالہ نیلم پولیس کے سامنے رو رو کر دہائی دیتی رہی۔


مزید پڑھیں: فیصل آباد: نوسالہ ملازمہ پر مالکن کا انسانیت سوز تشدد


پولیس کے مطابق مذکورہ بچی کسی صورت گھر واپس جانے کو تیار نہیں ملازمہ نیلم، ندیم نامی تاجر کے گھر گزشتہ چھ ماہ سے ملازمت کررہی تھی۔


مزید پڑھیں: فیصل آباد، گیارہ سالہ ملازمہ کو تشدد کے بعد آگ لگا دی گئی


پولیس کا کہنا ہے کہ بچی کے تحفظ کویقینی بنائیں گے، نیلم کے بیان پر والدین کو طلب کرلیا گیا ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں