The news is by your side.

Advertisement

بھارتی جیل میں شہید ہونے والے شاکر اللہ کی پوسٹ مارٹم رپورٹ جاری

سیالکوٹ : بھارتی جیل میں قیدیوں کے تشدد سے شہید ہونے والے پاکستانی شہری شاکر اللہ کی ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ جاری کردی گئی جس کے مطابق مقتول کی موت سر پر لگنے والی چوٹ سے ہوئی۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی قیدمیں جاں بحق پاکستانی شاکراللہ کی ابتدائی پوسٹ مارٹم رپورٹ جاری کردی گئی، ایم ایس علامہ اقبال ٹیچنگ اسپتال کے مطابق مقتول کی موت سرپر چوٹ لگنے سےہوئی۔

ڈاکٹر فاروق کا کہنا تھا کہ مقتول کے جسم کے نمونے لے کر فرانزک لیب بھیج دیے گئے جس کی رپورٹ آنے کے بعد مزید تفصیلات سے آگاہ کیا جائے گا۔ اُن کا کہنا تھا کہ میڈیکل سپریٹنڈنٹ کی سربراہی میں 6 رکنی ڈاکٹروں کی ٹیم نے پوسٹ مارٹم کیا۔

پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق شاکر اللہ کے سر میں گہری چوٹ موت کی وجہ بنی، ان کا پہلے بھی ایک پوسٹ مارٹم ہوچکا تھا، شاکر اللہ کے جسم سے دماغ اور دل غائب تھے۔

مزید پڑھیں: ڈسکہ: شہید شاکراللہ کی نماز جنازہ ادا کردی گئی

قبل ازیں سیالکوٹ کی تحصیل ڈسکہ کے رہائشی شاکر اللہ کا جسد خاکی بھارتی حکام نے علی الصباح پاکستان کے حوالے کیا جس کے بعد اُسے پوسٹ مارٹم کے لیے اسپتال منتقل کیاگیا۔

شہید کا نماز جنازہ آبائی علاقے  پڑھایا گیا جس میں شہریوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی اور پاکستان کے حق میں نعرے بلند کیے۔ شہریوں نے شاکراللہ کی میت پرپھولوں کی پتیاں نچھاورکیں جبکہ تدفین ڈسکہ میں واقع جیسروالا گاؤں کے قبرستان میں کی گئی۔

شہید کے بھائی شہزاد گلفام نے بتایا تھا کہ شاکراللہ 47 سالہ شاکراللہ ذہنی مریض تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ شکرگڑھ کے نزدیک میلہ دیکھنے گیا تھا اور 2003 میں غلطی سے سرحد عبورکرگیا تھا۔

یاد رہے کہ بھارتی ریاست راجستھان کے شہر جے پور کی جیل میں قید پاکستانی شہری شاکر اللہ کو بھارتی انتہاء پسند قیدیوں نے بد ترین تشدد کر کے 20 فروری کو شہید کردیا تھا۔

یہ بھی پڑھیں: بھارتی جیل میں قید پاکستانی قیدی ہندو انتہا پسندوں کے ہاتھوں قتل

اطلاعات کے مطابق سینٹرل جیل کے بیرک میں موجود ہندو انتہا پسندوں نے پاکستانی شہری کے سر پر وار کیے تھے جس کی وجہ سے انہیں گہرے زخم آئے تھے اور بروقت طبی امداد نہ ملنے کی وجہ سے وہ جیل میں ہی دم توڑ گئے تھے۔

غیر ملکی میڈیا نے پاکستانی قیدی کی شہادت کا ذمہ دار جے پور جیل کی انتظامیہ کو قرار دیا، قتل کے سلسلے میں تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

بھارت میں سفارتی ذمہ داریاں انجام دینے والے سابق سفیر عبدالباسط کا کہنا تھا کہ عوام کو کچھ نہیں کہہ سکتے کیوں بھارتی حکومت کا مؤقف ہی دہشت گردی اور انتہاپسندی پر مبنی ہے۔

سابق سفیر کا کہنا تھا کہ پاکستانی حکومت کو جے پور کی جیل میں قید شکور اللہ کے قتل میں ملوث افراد کو سخت سزا دینے کا مطالبہ کرنا چاہیے اور اسلام آباد میں موجود بھارتی سفیر کو طلب کرکے واقعے پر شدید احتجاج کرنا چاہیے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں