The news is by your side.

Advertisement

شہباز شریف سے تحقیقات اہم مرحلے میں: خاندان کو ملاقات کی اجازت نہیں مل سکی

لاہور: قومی احتساب بیورو (نیب) کی حراست میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف سے تحقیقات اہم مرحلے میں ہیں، شریف خاندان کو ان سے ملاقات کی اجازت نہ مل سکی۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیرِ اعلیٰ پنجاب شہباز شریف سے خاندان والے ملاقات کرنا چاہ رہے تھے لیکن انھیں اجازت نہیں مل سکی۔

شہباز شریف کی پیشی کے بعد درخواست دی گئی تو غور کیا جائے گا: نیب ذرائع

نواز شریف اور خاندان کے دیگر افراد نے ملاقات کی درخواست دی تھی، تاہم نیب ذرائع کا کہنا ہے کہ شہباز شریف سے تحقیقات اہم مرحلے میں ہیں اس لیے آج ملاقات کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔

نیب ذرائع کے مطابق شہباز شریف کی کل عدالت میں پیشی ہے، شہباز شریف کی پیشی کے بعد درخواست دی گئی تو غور کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ شہباز شریف سے خاندان کے افراد پہلے بھی کئی بار مل چکے ہیں۔ دو دن قبل اطلاع تھی کہ نیب نے اپوزیشن لیڈر کو 29 اکتوبر کو احتساب عدالت میں پیش کرنے پر غور کیا ہے، جب کہ عدالت نے شہباز شریف کو 30 اکتوبر تک جسمانی ریمانڈ پر نیب کے حوالے کیا تھا۔


یہ بھی پڑھیں:  نیب کا شہباز شریف کو 29 اکتوبر کو احتساب عدالت میں پیش کرنے پر غور


ذرائع کا کہنا ہے کہ نیب کی جانب سے شہباز شریف کے جسمانی ریمانڈ میں مزید توسیع کی استدعا کی جائے گی، نیب کے پراسیکیوٹر وارث علی جنجوعہ احتساب عدالت میں مزید جسمانی ریمانڈ کے لیے دلائل دیں گے۔

واضح رہے نیب لاہور نے 5 اکتوبر کو شہباز شریف کو صاف پانی کیس میں طلب کیا تھا تاہم ان کی پیشی پر انھیں آشیانہ ہاؤسنگ اسکینڈل میں کرپشن کے الزام میں گرفتار کیا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں