شرجیل خان نے بورڈ کے الزامات مسترد کردیے، جواب داخل sharjeel khan
The news is by your side.

Advertisement

شرجیل خان نے بورڈ کے الزامات مسترد کردیے، جواب داخل

اسلام آباد: اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل میں کرکٹر شرجیل خان نے عدالت میں جواب داخل کرادیا اور خود پر لگائے گئے تمام الزامات مسترد کردیے۔

اطلاعات کے مطابق بدھ کو کرکٹر شرجیل خان نے وکیل کے ذریعے عدالت میں اپنا جواب داخل کرادیا جس میں انہوں پاکستان کرکٹ بورڈ کی جانب سے لگائے گئے اسپاٹ فکسنگ کے تمام تر الزامات کو مسترد کردیا ہے۔

شرجیل خان کے وکیل نے اپنے جواب میں کہا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کا کوڈ آف کنڈکٹ آئین پاکستان کی خلاف ورزی ہے، ہم شرجیل خان پر لگائے گئے تمام الزامات مسترد کرتے ہیں۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ پی ایس ایل میں اسلام آباد یونائیٹڈ کے اوپنر شرجیل خان نے بورڈ کے کسی اصول سے روگرانی نہیں کی۔

وکیل نے اپنے موکل کے موقف کی حمایت میں کئی ماہرین کرکٹ کے بیانات بھی داخل کیے ہیں جن میں اسلام آباد یونائیٹڈ کے ہیڈ کوچ ڈین جونز، سابق کرکٹر صادق محمد اور محمد یوسف شامل ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے اپنی جاری کردہ پریس ریلیز میں کہا ہے کہ شرجیل خان کے وکیل کیس کو عدالت میں لے جانے پر یقین نہیں رکھتے تھے اور انہوں نے اسپاٹ فکسنگ کا معاملہ عدالت میں لے جانے سے قبل بورڈ کے سامنے اٹھایا تھا اور عدالت نہ جانے کی یقین دہانی کرائی تھی۔

بعدازاں شرجیل خان نے اپنے وکیل اعجاز کے ذریعے ٹریبونل بننے سے قبل تفصیلی جواب داخل کرادیا اور جواب کی کاپی بورڈ کو فراہم کردی گئی۔

جاری بیان میں پی سی بی نے کہا ہے کہ کوڈ آف کنڈکٹ کے تحت پی سی بی چاہے گا تو 13 مئی کو شرجیل خان کو تفصیلی جواب دے گا۔

خیال رہے کہ یومیہ بنیادوں پر سماعت 15 مئی سے شروع ہوگی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں