محکمہ اطلاعات سندھ میں کرپشن: شرجیل میمن پر فرد جرم عائد -
The news is by your side.

Advertisement

محکمہ اطلاعات سندھ میں کرپشن: شرجیل میمن پر فرد جرم عائد

کراچی: محکمہ اطلاعات سندھ میں پونے 6 ارب روپے کی کرپشن کے ریفرنس میں سابق صوبائی وزیر شرجیل میمن اور انعام اکبر سمیت دیگر ملزمان پر فرد جرم عائد کردی گئی۔

تفصیلات کے مطابق محکمہ اطلاعات سندھ میں پونے 6 ارب روپے کی کرپشن ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت میں ہوئی۔

سماعت میں سابق وزیر اطلاعات سندھ شرجیل میمن، ذوالفقار علی شلوانی، یوسف کابرو، انعام اکبر، سلمان منصور، منصور احمد راجپوت، گلزار علی، منصور ہاشمی، الطاف حسین میمن، عمر شہزاد،سید نوید اور مسعود ہاشمی پر فرد جرم عائد کردی گئی۔

سماعت کے دوران ملزمان نے صحت جرم سے انکار کردیا۔ عدالت نے گواہان کو نوٹس جاری کر کے انہیں اگلی سماعت پر طلب کرلیا۔

فرد جرم عائد کرنے پر ملزم انعام اکبر کے وکیل کی جانب سے اعتراض دائر کیا گیا۔ اعتراض میں کہا گیا کہ مقدمہ میں فرد جرم نہیں بنتی، میری درخواست سنی جائے۔

احتساب عدالت نے کیس کی مزید سماعت 3 مارچ تک ملتوی کر دی۔


پنجاب میں ملزمان ذاتی مچلکوں پر رہا ہو رہے ہیں

بعد ازاں سابق صوبائی وزیر شرجیل میمن نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں ملزمان ذاتی مچلکوں پر رہا ہو رہے ہیں۔ سندھ میں الگ قانون اور پنجاب میں الگ قانون کیوں ہے؟

انہوں نے کہا کہ آئین سب سے ایک جیسے سلوک کا کہتا ہے۔ وزیر اعظم جواب دیں، دہرا معیار کیوں۔ ’ٹرائل سے نہیں بھاگ رہے، مجھے کوئی پکڑ کر نہیں لایا۔ بیماری کے باوجود میں نے خود کو پیش کیا‘۔

شرجیل میمن کا کہنا تھا کہ جب ملک میں تھا تو میرے خلاف کوئی مقدمہ نہیں تھا۔ نیب سے پوچھیں غیر موجودگی میں نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں کیوں ڈالا ۔ چوہدری نثار کھل کر بولیں نواز شریف کا نام ای سی ایل میں ڈالا جائے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں