site
stats
اے آر وائی خصوصی

چالیس عمرے کرچکی ہوں، مدینے میں‌ بہت سکون ہے، شرمیلا فاروقی

کراچی: پیپلزپارٹی کی خاتون رکن اسمبلی شرمیلا فاروقی نے کہا ہے کہ جب مسائل میں بری طرح پھنس جاتی ہوں تو اللہ سے باتیں کرتی ہوں کیونکہ وہی مسائل حل کرسکتا ہے، سب سے زیادہ سکون مدینہ منورہ میں حاصل ہوتا ہے، چالیس بار عمرے کی سعادت حاصل ہوچکی ہے۔

اے آر وائی کے پروگرام شانِ افطار میں بطور مہمان شرکت کرنے والی شرمیلا فاروقی نے  بتایا کہ انہیں چالیس بار عمرے کی سعادت حاصل کرنے کا شرف حاصل ہوچکاہے، حالیہ رمضان المبارک شروع ہونے سے چار روز قبل وہ عمرہ ادا کر کے واپس آئیں۔

والدین شروع سے ہی مذہب کی طرف مائل ہیں

انہوں نے بتایا کہ والدین شروع سے ہی مذہب کی طرف مائل ہیں، انہوں نے حج ادا کیا ہوا ہے تاہم ایک بار ایسا ہوا کہ میرا حج پر اُن کے ساتھ جانے کا ارادہ تھا مگر آخری دنوں میں علالت (یرقان) کے باعث ڈاکٹر نے شرمیلا کو سفر کرنے سے منع کردیا۔

دوسال کی عمر سے والدین عمرہ ادائیگی کے لیے لے جارے ہیں

شرمیلا فاروقی نے کہا کہ 2 سال کی تھی جب سے والدین عمرہ ادائیگی کے لیے لے جارہے ہیں تاہم مجھے 8 برس کی عمر میں ادا کیا جانے والا عمرہ یاد ہے، ہماری فیملی نے کئی عمرے ادا کیے متعدد بار ایسا بھی ہوا کہ سال میں دو بار عمرے کی سعادت حاصل ہوئی۔

پی پی کی رکن اسمبلی نے کہا کہ والدین کی تربیت کے باعث بچپن سے ہی لگاؤ رہا، انہوں نے کم عمری میں بتایا کہ صحیح اور غلط کیا ہے اسی وجہ سے جب نماز فرض ہوئی تو ادائیگی شروع کی اور روزے فرض ہوتے ہی یہ مذہبی فریضہ بھی ادا کرنا شروع کیا۔

ویڈیو دیکھیں

مدینہ پہنچ کر بہت سکون ملتا ہے

مقامِ مقدسہ پہنچ کر کیا احساس ہوتا ہے؟ اس سوال کے جواب میں شرمیلا فاروقی نے کہا کہ مدینہ منورہ پہنچ کر بہت سکون محسوس ہوتا ہے کیونکہ وہ بہت پرسکون مقام ہے۔

پہلا روزہ کب رکھا، یاد نہیں

پہلا روزہ کب رکھا؟ اس سوال کے جواب میں شرمیلا نے کہا کہ مجھے اس بات کا علم نہیں اُس وقت عمر کیا تھی یا پھر روزہ کب رکھا؟ والدہ نے شوق میں 5 ، 6 گھنٹے کا روزہ رکھوایا تاہم جب روزے فرض ہوئے اُس کے بعد سے باقاعدہ رکھنا شروع کیے۔

یہ ویڈیو بھی دیکھیں

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top