The news is by your side.

Advertisement

پولیو سے معذور ہونے والی باہمت طالبہ اور مصورہ شازیہ بتول

کوئٹہ : دو بوند پولیو ویکسین نہ ملنے کی وجہ سے کوئٹہ سے تعلق رکھنے والی شازیہ بتول زندگی بھر کے لئے معذوری کا شکار ہوگئی لیکن اس نے ہمت نہ ہاری اور آگے بڑھتی گئی۔

تفصیلات کے مطابق پولیو جیسے موذی مرض نے ہزاروں نہیں بلکہ لاکھوں زندگیوں کو معذوری کے اندھے کنویں میں دھکیل دیا ہے ان ہی میں کوئٹہ سے تعلق رکھنے والی ایک لڑکی شازیہ بتول بھی شامل ہیں۔

بچپن میں دو بوند پولیو ویکسین نہ ملنے کی وجہ سے دونوں پیروں سے معذور ہونے والی اس لڑکی نے ہمت کا دامن ہاتھ سے چھوٹنے نہیں دیا، اسکول ،کالج، یونیورسٹی تک اس معذوری کے سبب معاشرے کا نارواں سلوک بڑی دیدہ دلیری سے برداشت کیا۔

مصورہ شازیہ بتول نے معذور افراد کے مسائل کو تصاویر کے ذریعے اجاگر کیا ہے، انہوں نے خوش نما رنگوں کو کینوس پر اس طرح اتارا کہ اپنی جیبوں کے ساتھ ساتھ لوگوں کو پولیو ویکسین کی اہمیت کا اندازہ بھی کروایا۔

آ ے آر وائی نیوز کی نمائندہ عطیہ اکرم کی رپورٹ کے مطابق مختلف شعبہ ہائے زندگی میں نمایاں کارکردگی پر تمغہ امتیاز حاصل کرنے والی شازیہ بتول کا پیغام ہے کہ پولیو ویکسین ہی پولیو کے خاتمے کا واحد ذریعہ ہے۔

شازیہ کے مطابق ہماری کوشش ہے کہ لوگوں کو بتایا جائے کہ معاشرے میں معذور افراد بھی توجہ کے مستحق ہیں اور ان کے لیے صرف اعلانات نہیں بلکہ عملی اقدامات کیے جانے چاہئیں۔

شازیہ بتول نے تمام والدین سے اس بات کا مطالبہ کیا ہے کہ وہ اپنے بچوں کو انسداد پولیو مہم کے دوران دو بوند پولیو ویکسین ضرور پلائیں اور عمر بھر کی معذوری سے بچائیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں