The news is by your side.

Advertisement

سندھ ہائی کورٹ کا وفاقی حکومت کو حساس ڈیٹا سے متعلق قانون سازی کا حکم

کراچی : سندھ ہائی کورٹ نے وفاقی حکومت کو حساس ڈیٹا سے متعلق قانون سازی کا حکم دیتے ہوئے جواب کیلئے مہلت دے دی۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ میں ساڑھے11کروڑپاکستانیوں کاڈیٹافروخت کرنے سے متعلق درخواست پر سماعت ہوئی۔

ڈپٹی اٹارنی جنرل نے بتایا کہ وفاقی وزارت اطلاعات نےاپناجواب جمع کرادیا، وفاقی وزارت اطلاعات نےبتایا ہے کہ قانون سازی کی جارہی ہے، قانون سازی کا مسودہ تقریباً تیار کرلیا گیا ہے۔

درخواست گزار نے کہا ک قانون سازی میں مسلسل تاخیرکی جارہی ہے، طارق منصورایڈووکیٹ کا کہنا تھا کہ ابھی تک کوئی نیشنل سائبرپالیسی نہیں، سائبرسےمتعلق پاکستان میں4بڑےواقعات ہوچکے ہیں۔

درخواست گزار کا مزید کہنا تھا کہ کوئی مزیدبڑاواقعہ ہوگیاتوقانونی تحفظ ہی نہیں ہوگا، جس پر جسٹس محمدعلی مظہر نے استفسار کیا قانون سازی میں اتنی تاخیرکیوں ہورہی ہے؟

ڈپٹی اٹارنی جنرل نے بتایا کہ کوروناوائرس کی وجہ سےتاخیرہورہی ہے، 2سے3ماہ میں مکمل قانون سازی کرلیں گے، قانونی مسودے کو وفاقی کابینہ کے سامنے رکھا جائے گا۔

عدالت نے وفاقی حکومت کو حساس ڈیٹا سے متعلق قانون سازی کا حکم دیتے ہوئے ڈیٹا سےمتعلق جواب کے لیے مہلت دے دی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں