site
stats
پاکستان

ہائی کورٹ نے ’مون گارڈن‘ خالی کرانے کے فیصلے پراسٹے جاری کردیا

کراچی: سندھ ہائی کورٹ نے مون گارڈن کیس سے متعلق پولیس کو 18 نومبر تک کارروائی کرنے سے روکتے ہوئے مکینوں کی فریق بننے کی درخواست بھی منظورکرلی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائی کورٹ نے مون گارڈن کے مکینوں کو عارضی ریلیف دیتے ہوئے مون گارڈن کے تمام فریقین کو 18 نومبر کو طلب کرلیا ہے

عدالت نے بلڈرکو گرفتار کرنے اور آئی جی سندھ کو رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیتے ہوئے کیس میں ملوث تمام اداروں کو نوٹسس جاری کردیے ہیں جب کہ پولیس کو مون گارڈن کیس سے متعلق 18 نومبر تک کارروائی سے روک دیا ہے۔

عدالت نے مون گارڈن کے مکینوں کی فریق بننے سے متعلق درخواست بھی منظور کرلی ہے۔

دوسری جانب سندھ ہائی کورٹ کی جانب سے عارضی ریلیف کی خبر ملتے ہی احاطہ عدالت میں موجود متاثرین میں خوشی کی لہردوڑ گئی جب کہ متاثرین نے احتجاج ختم کرتے ہوئے اپنے گھروں کا رخ کرنا شروع کردیا اور احتجاج ختم ہونے کے بعد روڈ بھی ٹریفک کے لیے کھل گیا اور پولیس بھی واپس چلی گئی ہے۔

متاثرین کا کہنا تھا کہ ان کا کہنا تھا کہ ہم سب پچھلے 4 دن سے یہاں بیٹھے ہیں لیکن آج عدالت کے حکم کے خوشی کی خبر ملی لیکن ہمیں اور بھی خوشی بھی ہوگی کہ عدالت 18 کے بعد بھی ہمارے حق میں فیصلہ دے۔

دوسری جانب پولیس نے عدالت میں اپنی ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ ہم بلڈرز کو گرفتار کرنے میں ناکام رہے ہیں۔

یاد رہے کہ چار روزقبل عدالتی حکم پر پولیس کی بھاری نفری گلستان جوہر میں واقع مون گارڈن کے فلیٹس خالی کرانے پہنچی تھی جس کے ردعمل میں مکینوں نے دھرنا دے دیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top