The news is by your side.

Advertisement

شہباز شریف اور حمزہ کی عبوری ضمانت میں25ستمبر تک توسیع

لاہور : بینکنگ کورٹ نے منی لانڈرنگ اور شوگر انکوائری کیس میں شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں25ستمبرتک توسیع کردی۔

شوگر انکوائری اور منی لانڈرنگ کیس میں شہبازشریف اور حمزہ شہباز آج لاہور بینکنگ کورٹ میں پیش ہوئے، ایف آئی اے نے تحقیقاتی رپورٹ عدالت میں پیش کی۔

بینکنگ کورٹ میں شوگرانکوائری اور منی لانڈرنگ کیس کی سماعت بینکنگ کورٹ کے جج محمد اسلم گوندل نے کی، عدالت میں شہبازشریف اورحمزہ شہباز کی حاضری لگوائی گئی۔

اس موقع پر شہبازشریف نے کہا کہ میرے خلاف کرپشن اور منی لانڈرنگ کا کوئی کیس نہیں بنتا، میں رمضان شوگرمل کا حصہ دار اور نہ ہی ڈائریکٹر ہوں، اپنی وزارت اعلیٰ کے دور میں شوگر ملز کو سبسڈی نہیں دی۔

عدالت نے ایف آئی اے کے وکیل سے استفسار کیا کہ کتنی بار تحقیقات میں پیش ہوئے ہیں؟ جس پر جواب دیا گیا کہ ایک مرتبہ طلب کیا ہے، عدالت نے ریمارکس دیے کہ زبانی باتیں کریں گے تو کچھ نہیں ہوگا۔

عدالت نے ایف آئی اے کے وکیل  سے کہا کہ کتنی بار تحقیقات میں پیش ہوئے ہیں، ایف آئی اے وکیل نے جواب دیا کہ 30جون کو ملزمان کو طلب کیا تھا۔

جج نے کہا کہ اس کے بعد آپ نے کیا کیا؟ 2ماہ میں 4لائنیں لکھیں گے تو تحقیقات کب مکمل ہوں گی؟ عدالت نے حکم دیا کہ آئندہ سماعت پر ڈپٹی ڈائریکٹر  ڈاکٹر رضوان تفتیش میں پیش رفت کی رپورٹ سمیت پیش ہوں۔

حمزہ شہباز نے عدالت کے روبرو اپنے بیان میں کہنا تھا کہ ایک سال قبل انہوں نے مجھ سے جیل میں تحقیقات کیں اور جو سوالات پوچھے گئے میں نے ان کے مکمل جوابات دئیے۔

حمزہ شہباز نے مزید کہا کہ اس وقت انہوں نے یہ نہیں کہا کہ آپ کی گرفتاری کی ضرورت ہے، اب اس کیس میں ان کو گرفتاری کی کیا ضرورت پیش آگئی۔

بعد ازاں بینکنگ کورٹ نے شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت میں25ستمبرتک توسیع کرتے ہوئے آئندہ پیشی تک سماعت ملتوی کردی، شہباز شریف اور حمزہ شہباز بینکنگ کورٹ سے واپس روانہ ہوگئے۔

کیس کی سماعت کے موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گٸے تھے، عدالت میں عطا تارڑ اور عظمیٰ بخاری سمیت ن لیگی رہنما اور کارکنان بھی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں