The news is by your side.

Advertisement

پاکستان اور بھارت کے درمیان امن کی شاہراہ کشمیر سے گزرتی ہے‘ شہبازشریف

لاہور: اپوزیشن لیڈر شہبازشریف نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے بیان کی شدید مذمت ہوئے کہا کہ پاکستان پرالزام سے پہلے مقبوضہ کشمیرمیں مظالم پراظہارشرمندگی کرنا چاہیے۔

تفصیلات کے مطابق اپوزیشن لیڈر اور مسلم لیگ ن کے صدر شہبازشریف نے کہا کہ پلوامہ واقعہ کی مذمت کی ، بلا تحقیق واقعہ پاکستان سے جوڑنا پہلی بارنہیں ہوا۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی رویہ چوری اور سینہ زوری کا مظہر ہے، پہلے بھی بھارت نے مشکوک واقعات رچائے جس پر سوال اٹھے۔

شہبازشریف نے کہا کہ پیلٹ گن سے 20 ماہ کی بچی کی بینائی چھیننے پرمودی کو تاؤد کھانا چاہیے تھا، بھارت جموں وکشمیر کے عوام پر ظلم بند کرے۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیرمیں آبادی کا تناسب بدلنے سے بازرہے، مسئلہ اقوام متحدہ کی قراردادوں اورکشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کیا جائے۔

شہبازشریف نے کہا کہ کلبھوشن کی گرفتاری پاکستان میں انتشار پھیلانے کےعزائم کا زندہ ثبوت ہے، کلبھوشن وہ حقیقت ہے جس سے بھارت نظریں چرا نہیں سکتا۔

قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہبازشریف نے واضح کیا کہ پاکستان اور بھارت میں امن کی راہ کشمیر سے ہوکر ہی گزرتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سرجیکل اسٹرائیک کی بات حماقت ہے، بھارت عقل وہوش کے ناخن لے، سرجیکل اسٹرائیک کی داستانوں پراتنامذاق بنا بھارت نے بات کرنا چھوڑ دی۔

شہبازشریف نے کہا کہ بہادر افواج دشمن کے ہرمہم جوئی کا منہ توڑ جواب دے چکی ہیں،آئندہ انشااللہ زیادہ موثرانداز میں جواب دیں گے، قوم افواج کے شانہ بہ شانہ دشمن کےعزائم خاک میں ملانے کو تیار ہے۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ تاریخ گواہ ہے کہ بھارت الیکشن اور دیگر مواقع پر ایسے واقعات کو تحریک آزادی کشمیر اور پاکستان کو بدنام کرنے کے لیے استعمال کرنے کی کوشش کرتا آیا ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں پر حملہ پاکستان کا اظہار تشویش، بھارتی الزامات مسترد

یاد رہے کہ گزشتہ روز پاکستان نے مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوجیوں کی ہلاکت پر اظہار تشویش کرتے ہوئے بھارتی الزامات کو مسترد کردیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں