The news is by your side.

Advertisement

فوٹیج سی سی ٹی وی کیمرا سے لی جاتی ہے، رانا ثناء کیس ختم نہیں ہوا، شہر یار آفریدی

اسلام آباد : وفاقی وزیر شہریار آفریدی نے کہا ہے کہ فوٹیج سی سی ٹی وی کیمرا سے لی جاتی ہے رانا ثناءاللہ کی ضمانت سے کیس ختم نہیں ہوگیا۔

یہ بات انہوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں گفتگو کرتے ہوئے کہی، انہوں نے کہا کہ72سال بعد سب مان گئے کہ قائداعظم ٹھیک تھے باقی سب غلط تھے، قائداعظم محمد علی جناح نے ہی دو قومی نظریہ پیش کیا تھا۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ویڈیو اور فوٹیج میں کیا فرق ہوتا ہے میں آپ کو بتاتا ہوں،
فوٹیج سی سی ٹی وی کیمرا سے لی جاتی ہے، فوٹیج سی سی ٹی وی کیمرے کی ریکارڈنگ کہلاتی ہے، ویڈیو کیمرے سے بنائی جاتی ہے آپ موجود ہوتے ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ رانا ثناءاللہ کی ضمانت سے کیس ختم نہیں ہوا، اس کیس میں تمام ثبوت عدالت کو پیش کردیے، رانا ثناءاللہ کے خلاف ابھی ٹرائل شروع نہیں ہوا، ان کےخلاف انٹیلی جنس بیسڈ آپریشن کیا گیا تھا۔

وفاقی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ اے این ایف پراسیکیوشن کا کام ہے کہ عدالت میں ثبوت اور گواہ پیش کرے، راناثناءاللہ کے وکلا نے کیس میں تاخیری حربے استعمال کیے، ان کے وکلا کبھی کہتے تھے کہ وکلا کی ہڑتال ہے۔

انہوں نے کہا کہ رانا ثناءاللہ کے وکلا نےایک درخواست ضمانت جمع کرادی، راناثناءاللہ کی دو درخواستیں ضمانت بھی مسترد کی گئیں، معصوم لوگوں کو پھنسانے والے پرلعنت ہو۔

Comments

یہ بھی پڑھیں