The news is by your side.

Advertisement

شہلا رضا نے ٹوئٹ ڈیلیٹ کر دی

کراچی: وزیر ترقئ نسواں سندھ شہلا رضا نے جہانگیر ترین سے متعلق ٹوئٹ ڈیلیٹ کر دی۔

تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی کی خاتون رہنما شہلا رضا نے اگلے ہفتے جہانگیر ترین کی آصف زرداری سے ملاقات کے دعوے پر مبنی ٹوئٹ ڈیلیٹ کر دی ہے، تاہم یہ سوال اٹھا ہے کہ کیا جہانگیر ترین سے متعلق ٹوئٹ کا مقصد سنسنی خیزی پھیلانا تھا؟

شہلا رضا نے ٹوئٹ کیا تھا کہ جہانگیر ترین پیپلز پارٹی میں شامل ہو رہے ہیں، اور اگلے ہفتہ کراچی میں سابق صدر آصف زرداری سےملاقات کریں گے۔

انھوں نے لکھا ’خیال ہے کہ جہانگیر ترین اس ملاقات میں پی ٹی آئی چھوڑنے اور ساتھیوں سمیت پی پی پی میں شمولیت اختیار کر لیں گے، اگر واقعی ایسا ہوگیا تو نہ بزدار رہے گا نہ نیازی ہوگا۔‘

جہانگیر ترین نے خود سے متعلق شہلا رضا کا دعویٰ مسترد کر دیا

تاہم کچھ ہی دیر بعد جہانگیر ترین نے ایک بیان میں اس دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا میرے خلاف مسلسل پروپیگنڈا کیا جا رہا ہے، پی پی قیادت سے ملاقات اور شمولیت کی خبروں میں صداقت نہیں ہے، میرے خلاف خبریں چلوانے والوں کو مایوسی ہوگی.

واضح رہے کہ اس ٹوئٹ نے سیاسی فضا میں ایک دم سے ہل چل مچا دی تھی، ایک طرف عوامی نیشنل پارٹی نے پی ڈی ایم سے علیحدگی کا اعلان کر کے اپوزیشن اتحاد کو جھٹکا دیا تھا، دوسری طرف پیپلز پارٹی کی جانب سے یہ ٹوئٹ مزید ہل چل کا سبب بنا، تاہم ایسا لگتا ہے کہ شہلا رضا کی جانب سے مذکورہ ٹوئٹ ایک سوچ سمجھی اور بے بنیاد سنسنی خیزی پھیلانے کے سوا کچھ نہیں تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں