The news is by your side.

Advertisement

جان قربان کرنے والے پولیس کے شہداء کو سلام پیش کرتا ہوں، شہریار آفریدی

کراچی : وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی نے کہا ہے کہ سلام ہے پولیس کے ان جوانوں کو جو مفتی تقی عثمانی کی حفاظت کرتے ہوئے شہید ہوئے۔

یہ بات انہوں نے کراچی میں مفتی تقی عثمانی سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ شہریار آفریدی نے کہا کہ پولیس چاہے سندھ کی ہو یا کسی بھی صوبے کی ہو شہر میں امن ان ہی کی قربانیوں سے آیا ہے، پولیس کے ان جوانوں کو سلام پیش کرتا ہوں جنہوں نے اپنے فرائض کی ادائیگی دوران جام شہادت نوش کیا۔

ایک سوال کے جواب میں وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ پاکستان سے جو منافقت کرے گا اللہ اس کو ذلت کا نشانہ بنادے گا، پاکستان پر اور پاکستان کی سوچ پر کبھی بھی سیات نہیں ہونی چاہیے۔

یہ بات یہاں کے لیڈر بھول جاتے ہیں جو پاکستان کے ساتھ کھیلتے ہیں، اقتدارمیں عزت نہیں ملتی بلکہ عزت اللہ کے فضل سے حاصل ہوتی ہے۔

تمام مذاہب کو تحفظ دینا ریاست کی ذمہ داری ہے، مدارس، مساجد، علما، چرچ، مندر کو عزت دینا ذمہ داری ہے، مدارس کے لوگوں کو بدقسمتی سے عزت نہیں دی گئی۔ اب ان کو بھی عزت ملے گی۔

مزید پڑھیں: تمام مذاہب کو تحفظ دینا ریاست کی ذمہ داری ہے: شہریار آفریدی

یاد رہے کہ اس سے قبل سندھ رینجرز کے26ویں بیچ کی پاسنگ آؤٹ پریڈ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے شہریار آفریدی کا کہنا تھا کہ ملک میں بیٹھ کر دشمن کی بولی بولنے والے اپنا قبلہ درست کرلیں، انہیں عبرت کا نشانہ بنا دیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ اب کوئی پاکستان کو ڈکٹیٹ نہیں کرسکے گا، ریاست اب کسی قسم کا کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی۔ اب کوئی بھی پاکستان کے باہر سے یہاں کے نظام کو مفلوج نہیں کرسکے گا۔

وزیر داخلہ نے مزیدکہا کہ کراچی کے حالات پہلے کے مقابلے میں بہت بہتر  ہوگئے ہیں، یہ شہر  پھر سے معاشی اور تجارتی سرگرمیوں کا مرکز بن گیا ہے اور اس کی رونقیں لوٹ آئی ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں