The news is by your side.

Advertisement

نوازشریف دوسرے بانی ایم کیوایم بنتے جا رہے ہیں، شیخ رشید

اسلام آباد : سربراہ عوامی مسلم لیگ شیخ رشید نے کہا ہے کہ نوازشریف کی سیاست کا دھڑن تختہ ہوچکا ہے اور اب پاکستان میں نیا نظام آنے والا ہے جس میں چند خاندانوں کی نہیں بلکہ عوام کی حکومت ہو گی.

ان کا خیالات کا اظہار انہوں نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام دی رپورٹرز میں کیا، دوران گفتگو شیخ رشید نے انکشاف کیا کہ نوازشریف پیپلز پارٹی کے ساتھ تعلقات رکھنا چاہتے ہیں جب کہ خود پیپلزپارٹی کے سر پر بھی تلوار لٹک رہی ہے۔

شیخ رشید نے کہا کہ حدیبیہ کیس میں نواز شریف، شہباز شریف، حسین نواز و حسن نواز اور اسحاق ڈار بچ نہیں سکیں گے یہ لوگ جتنی کوششیں کرلیں اب ان کو کچھ نہیں حاصل ہونا اور اب تو کوئی این آراو بھی نہیں ہونا ہے۔

سربراہ عوامی مسلم لیگ نے کہا کہ شریف خاندان کے درمیان تنازعات اس حد تک بڑھ چکے ہیں کہ پورا خاندان بھی نااہل ہوجائے تو شہباز شریف کو آگے نہیں آنے دیا جائے گا اور نہ وزیراعظم بننے دیا جائے گا تمام فیصلوں کی چابی محترمہ کلثوم نواز کے پاس ہے۔

شیخ رشید نے کہا ہے کہ نوازشریف نے 63 اور 62 ختم کرنے کی کوشش کی توبہت برا حال ہوگا آرٹیکل 63 اور 62 کے خاتمے کے خلاف دینی جماعتیں بھی سڑکوں پر ہوں گی اور 62 اور63 کی شقوں کو یہ آئین سے نہیں نکال سکتے اگر ایسا کیا تو ان کے لیے مسائل اور بڑھ جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے ستارے گردش میں ہیں اسی لیے نواز شریف جو کام کر رہے ہیں جواب میں اس کا الٹ ہو رہا ہے اور اب یہ لوگ ریفرنسز میں نیب کے سامنے پیش نہیں ہو رہے ہیں، شریف خاندان کی  یہ دھونس اور بد معاشی زیادہ عرصے نہیں چلے گی۔

شیخ زشید نے کہا کہ عدلیہ نے کبھی پارلیمنٹ پر حرف نہیں آنے دیا ہے لیکن نوازشریف کو ملکی ادارے راستے کی رکاوٹ لگتے ہیں جس پر کڑی بھی تنقید کرتے ہیں لیکن بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کا نام تک نہیں لیتے۔

انہوں نے کہا کہ کلبھوشن کی گرفتاری پاک فوج کی بڑی کامیابی تھی لیکن نوازشریف نے جان بوجھ کر کلبھوشن کا کیس نہیں لڑا، یہ نواز شریف وہی ہیں جنہوں نے اجمل قصاب کے گھر کا پتہ دیا اور اسے پاکستانی شہری کہا جب کہ نواز شریف کی بھارت میں ملاقاتیں بھی بے نقاب ہوچکی ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ لیاقت باغ کا جلسہ تاریخی تھا جسے دیکھ کر شریف برادران کی آنکھیں کھل گئی ہیں اور وہ آئندہ الیکشن میں اپنی شکست دیکھ ر ہے ہیں۔

شیخ رشید نے ڈونلڈ ٹرمپ کی افغان پالیسی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ امریکا کو پاک چین تعلقات اچھے نہیں لگ رہے اور وہ سی پیک منصوبے سے بھی نالاں ہے اس لیے اس قسم کی پالیسی مرتب کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ پہلی بارامریکا بھارت کی گود میں چلا گیا ہے، بھارت پاکستان کے لیے ناسور کا درجہ رکھتا ہے لیکن ہمارے حکمرانوں نے کشمیر سے متعلق زبانی بیان دیئے لیکن عملی طور پرکچھ نہیں کیا۔

سربراہ عوامی مسلم لیگ نے کہا کہ پاکستان کو ملک کے اندر چور قیادت سے خطرہ ہےاگر ملکی سول قیادت چور نہ ہوتی تو یہ امریکا سے نہ ڈرتے چوں کہ امریکا کو ان کی کرپشن اور لوٹ مار کا پتہ ہے اس لیے چور لیڈرشپ امریکا کی گیدڑ بھپکیوں سے ڈر جاتی ہے۔

شیخ رشید نے کہا ہے کہ روس اور چین کی جانب سے امریکا کے پاکستان پر بے بنیاد الزامات کے معاملے پر بیان دینا بڑی بات ہے جب کہ اس معاملے پر آرمی چیف نے جو بیان دیا وہ حکومت کو دینا چاہئے تھا دراصل پاک فوج کے سربراہ نے پوری قوم کی ترجمان کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ گوادر واحد پورٹ ہوگا جوچین کیلئے دنیا بھرکا راستہ کھول دے گا اس لیے گوادر پورٹ کے خلاف دنیا اکٹھی ہو رہی ہے لیکن قوم متحد رہے پاکستان میں نیا نظام آئے گا جس میں عوام کی حکمرانی ہو گی

شیخ رشید نے کہا کہ افغانستان ہمارے ساتھ کبھی بھی نہیں رہا ہے اسی طرح روس کو بھی بھارت کا تجارتی تعلقات اچانک ختم کرنا نہیں بھایا ہے ابھی روس مزید کھل کرسامنے آئے گا۔

انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان 63،62 پرسمجھوتہ نہیں کریں گے، نواز شریف دوسرے بانی ایم کیوایم بنتے جارہے ہیں، نوازشریف کی مت ماری گئی ہے اور ان کی حالت قابل رحم ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں