The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف کی سربراہی میں‌ اجلاس ہونا سیاست کی توہین ہے، شیخ رشید

کراچی: عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہاہے کہ 1970ء کی طرح عمران خان کو ووٹ ملے تو ہی مسائل حل ہوں گے، اب سولو فلائٹ ہی مسئلے کا حل ہے، نواز شریف کی سربراہی میں اجلاس ہونا سیاست کی توہین ہے۔

پارلیمنٹ کے باہر میڈیا سے گفت گو کرتے ہوئے شیخ رشید کا کہنا تھا کہ جس طرح 1970ء میں پیپلز پارٹی کو ووٹ ملے تھے اسی طرح اگر قوم عمران خان کو ووٹ دے تو ملک میں سیاسی استحکام آسکتا ہے۔

انہوں نے اجلاس کے انعقاد پر کہاکہ یہ نام نہاد اپوزیشن ہے اچھا ہے کہ سارا گند ایک ہی جگہ جائے گا،اب سولو فلائٹ ہی سیاست کا حل ہے۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ اچکزئی ایک دم نواز شریف کومحبوب ہوگیا،دونوں کی سوچیں مطا بقت رکھتی ہیں،ہم پاکستان کے ساتھ ہیں ،کوئی اپوزیشن نہیں چاہتے، بعض چھوٹے لوگ بڑے گھروں میں چلے گئے اور ان کے سارے ہتھکنڈے اپنے دولت کو بچانے کے لیے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں یہ سمجھتا ہوں کہ ساری قوم پاک فوج کے ساتھ ہے، ساری قوم کشمیر کے معاملے پر کشمیریوں کے ساتھ ہے اور کشمیر ی اس اجلاس کی طرف نہیں دیکھ رہے، اس میٹنگ کو ایک کور ہیڈ کوارٹر اور ایک میجر نے بریف کرنے کے قابل نہیں سمجھا، ساری دنیا کو پتا ہے کہ پاکستان کی خارجہ پالیسی کن کے اشاروں پر چلتی ہے، ن لیگ کا تو وزیر خارجہ ہی کوئی نہیں تو وہ خارجہ امور کیا چلائیں گے۔

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ نے نواز شریف کو مخاطب کیا کہ وہ کہتے ہیں شیخ رشید اگلی اسمبلی میں نہیں ہوگا، میں کہتا ہوں کہ اگر وقت آیا تو حکومت کے شانہ بشانہ دشمنوں سے لڑوں گا، اپنی بندوق اور اسلحے سے لڑوں گا لیکن پاناما لیکس کے چوروں اور سانحہ ماڈل ٹاؤن کے قاتلوں کو نہیں چھوڑوں گا۔

شیخ رشید نے مزید کہا کہ ن لیگ کی سربراہی میں یہ اجلاس ہونا ہی سیاسی توہین ہے ،ایک شخص رنگے ہاتھوں پکڑا گیا ہے اوراس کی سربراہ میں اجلاس ہورہا ہے، سیاسی جماعتوں کو سب سے پہلے یہ کہنا چاہیے تھا کہ اجلا س کی صدارت اسپیکر یا صدر مملکت کرلے کیوں کہ جو شخص کرپشن میں ملوث ہے وہ کس طرح ملک کی پالیسی دے سکتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں