The news is by your side.

Advertisement

شیخ رشید کا وزیراعظم عمران خان کو جہانگیر ترین سے بات چیت کا مشورہ

اسلام آباد : وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے وزیراعظم عمران خان کو جہانگیرترین سے بات چیت کا مشورہ دیتے ہوئے کہا دوستوں میں اختلافات ہوتے ہیں،مگر لاتعلقی نہیں کی جاتی۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا 22مارچ کو او آئی سی اجلاس ہونے جارہا ہے اور کل وزیر اعظم تاریخی دورے پر روس جارہےہیں جبکہ 27مارچ کو آسٹریلیا کی ٹیم بھی پاکستان آ رہی ہے ، آسٹریلوی کے لئے سیکیورٹی کی مکمل تیاری ہے۔

وفاقی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کی روس سے واپسی پر پاکستان کے ای پاسپورٹ کا افتتاح کریں گے۔

اپوزیشن کے حوالے سے شیخ رشید نے کہا کہ اپوزیشن شوق سے آئے کچھ نہیں ملے گا، جب بھی تحریکیں چلی ہیں خواہش پر نتیجے نہیں ملتے، تحریک عدم اعتماد لائیں اس میں بھی ناکام ہونگے، ساڑھے3سال سے لگے ہیں آج آرہےہیں کل آرہے ہیں ، 172ممبر لانا آپ کا کام ہے پھر کہتے ہیں کورونا آگیا تھا، فون آگیا تھا۔

اسلام آباد پولیس سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں پولیس کا ہائی لیول سینٹر قائم کیاجارہاہے، پولیس ہائی لیول سینٹر میں ایک چھت کے نتیجے سہولتیں دی جائیں گی۔

وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ مجھے اندازہ ہے کہ 23مارچ کو وہ شائد نہ آئیں ، اپوزیشن کہتی ہے کارڈ چھپائے ہیں تو عمران خان بھی سینےسے کارڈ لگا کر کھیلتاہے، آپ باتیں ملاقاتیں گزارشات جو کر رہے ہیں ان کا کچھ نہیں نکلنا، الیکشن کو ایک سال رہ گیا،شہروں میں انتخابی سرگرمیاں شروع ہوچکی ہیں۔

حکومت کیخلاف عدم اعتماد سے متعلق شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ایم کیوایم اور ق لیگ ہماری اتحادی پارٹی ہیں ، یہ اپوزیشن عدم اعتماد لائے گی تب بھی پھنسے گی اورنتیجے پر بھی پھنسے گی، دنیا کہاں جارہی ہے اوراپوزیشن کہاں جاری ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ اپوزیشن کو عقل کے ناخن لینے چاہئیں، پھر یہ نہ ہوملک کسی اور راستے پر نکل جائے، بعد میں یہ روئیں گے کہ فون کال آگئی تھی، کسی فون کال کی ضرورت نہیں عمران خان پاکستان کی سیاست میں سرخرو ہوگا۔

وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ جہانگیر ترین سے بات کی جائے تو امید ہے وہ مثبت جواب دے گا،میں چاہتا ہوں جہانگیر ترین سے بھی بات چیت کی جائے، دوستوں میں اختلافات ہوتے ہیں مگر لاتعلقی نہیں ہوجاتی ، پی ٹی آئی والوں کوناراض ہونےکی ضرورت نہیں، اپنی سیاسی رائے دینے میں آزاد ہوں۔

انھوں نے کہا کہ پاک فوج عظیم ادارہ ہے، اس وقت بھی پاک فوج کے جوان سرحد پر جانوں کا نذرانہ پیش کررہےہیں، فوجی قلندر کی ملک کے تمام معاملات پر20،20سال کی اسٹڈی ہوتی ہے اور پاک فوج پاکستان کی سالمیت اور قومی معاملات کو بخوبی سمجھتی ہے۔

اطہر متین کے قتل کے حوالے سے وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ اطہرمتین زبردست آدمی تھا ، مرادعلی شاہ سے کہا ہے رینجرز کی نفری بڑھا سکتے ہیں، ایسا نظرآرہاہے کہ کراچی میں کوئی قانون نہیں رہا، سندھ کےوزیراعلیٰ جوتعاون مانگیں گے ہم دینے کوتیارہیں ۔

شیخ رشید نے کہا کہ مالک مکان جو کرائے دار رکھے گا اس کا ڈیٹا تھانے کو دےگا، اسلام آباد میں جودفعہ 144لگارہےہیں وہ سیاسی سطح پر نہیں، غیرملکی کرائےدار رکھنےسےپہلے ڈیٹا بھی تھانے کودیں۔

پیپلز پارٹی کے لانگ مارچ سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ بلاول زرداری آرہےہیں شوق سے آئیں، ہماری کوشش ہوگی بلاول زرداری انتظامیہ سے شیڈول طے کریں، راولپنڈی انتظامیہ کو بھی اسلام آبادسیف سٹی تک رسائی دی ہے۔

وزیرداخلہ نے کہا فیصلہ کیاہےاسلام آبادمیں پاکستان کا جدید مارڈرن کرکٹ اسٹیڈیم بنانے جارہےہیں، اسلام آبادمیں مارڈرن اسٹیڈیم کیساتھ فائیواسٹار ہوٹل بھی بنایا جائے گا۔

آپریشن ردالفساد کے 5 سال مکمل ہونے پر شیخ رشید کا کہنا تھا کہ دہشت گردی کیخلاف آپریشن ردالفساد کرکےفوج نے دنیا میں ثابت کیا ، پاک فوج ،اداروں ، قوم نے 80ہزارجانوں کی قربانیاں دیں۔

انھوں نے مزید کہا پیکاآرڈیننس پر آئی ٹی وزارت نے کام کیا ہے، محسن بیگ کا کیس عدالت میں اس پر بات نہیں کرسکتا،شیخ رشید

وفاقی وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ اللہ عمران خان کو عزت دے گا، اپوزیشن جو گلے پڑتی تھی آج وہ ایک دوسرے کے پاؤں پڑ رہےہیں، اپوزیشن کی سیاسی غلط فہمیوں سے بڑا حادثہ ہوسکتا ہے، ان کا خلفشار ان کے اپنے گلے پڑے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں