The news is by your side.

Advertisement

شیری رحمان کا پروڈکشن آرڈر قوانین میں ترمیم کے فیصلے پر رد عمل

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی کی رہنما سینیٹر شیری رحمان نے پروڈکشن آرڈر قوانین میں ترمیم کے فیصلے پر ردِ عمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ پروڈکشن آرڈر کا طریقہ ساری دنیا میں مستعمل ہے۔

تفصیلات کے مطابق پروڈکشن آرڈر سے متعلق وزیر اعظم کی ہدایت پر شیری رحمان نے کہا ہے کہ پروڈکشن آرڈر کے طریقے پر ساری دنیا میں عمل ہو رہا ہے، حکومت احتساب کو پالیسی سے نہ الجھائے۔

رہنما پیپلز پارٹی کا کہنا تھا کہ جب کوئی ملک سے باہر جانے کی بات نہیں کر رہا تو شور کس بات کا ہے، حکومت پروڈکشن آرڈر سے متعلق شور کیوں مچا رہی ہے۔

سینیٹر شیری رحمان نے کہا کہ احتساب کو سیاسی انتقام کے لیے استعمال نہ کیا جائے، آپ چور ڈاکو کہتے ہیں اور یہاں لفظ سلیکٹڈ برداشت نہیں ہوتا۔

یہ بھی پڑھیں:  منی لانڈرنگ اور کرپٹ ارکان کے پروڈکشن آرڈر جاری نہیں ہونے چاہئیں، وزیراعظم

واضح رہے کہ آج وزیر اعظم عمران خان نے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں ہدایت کی کہ اراکین پارلیمنٹ کے پروڈکشن آرڈر سے متعلق قوانین میں ترمیم کی جائے، جس کے بعد یہ معاملہ وزارت قانون کے سپرد کر دیا گیا۔

اجلاس میں وزیر اعظم نے کہا کہ منی لانڈرنگ اور اور کرپشن میں ملوث ارکان کے پروڈکشن آرڈر جاری نہیں ہونے چاہئیں اور نہ ایسے قیدیوں کو جیل میں سیاسی قیدی کا درجہ ملنا چاہیے۔

انھوں نے مزید کہا کہ جن پر پیسے چوری کرنے کا الزام ہے وہ اسمبلی میں تقرریں کیسے کر سکتے ہیں، یہ ہمیں سلیکٹڈ کس منہ سے کہتے ہیں، یہ تاریخی خسارہ چھوڑ کر گئے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں