site
stats
سندھ

کراچی: جیل بھرو تحریک، شیعہ رہنماء نے رضاکارانہ گرفتاری پیش کردی

کراچی: لاپتہ نوجوانوں کی عدم بازیابی کے خلاف مذہبی اسکالر علامہ حسن ظفر نقوی سمیت چار افراد نے احتجاجاً رضاکارانہ گرفتاری پیش کر کے جیل بھرو تحریک کا آغاز کردیا۔

تفصیلات کے مطابق شیعہ مذہبی تنظیموں نے مبینہ طور پر سیکڑوں لاپتہ نوجوانوں کی عدم بازیابی کے خلاف 6 اکتوبر سے جیل بھرو تحریک کا آغاز کیا جس کے تحت آج نمازِ جمعہ کے بعد مجلس وحدت المسلمین کے رہنماء سمیت دیگر چار افراد نے احتجاجاً گرفتاری پیش کی۔

شیعہ تنظیموں کی جانب سے ملک گیر جیل بھرو تحریک کے اگلے مرحلے میں مختلف شیعہ رہنماء اور لاپتہ افراد کے اہل خانہ رضاکارانہ گرفتاریاں پیش کریں گے جبکہ 13، 22 اور 27 اکتوبر کو عباس ٹاؤن، نمائش اور ناظم آباد سے گرفتاریاں پیش کی جائیں گی۔

گرفتار ی سے قبل شیعہ رہنماء نے حسن ظفر نقوی نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ہماری حب الوطنی کو کمزوری سمجھا جارہا ہے، بے گناہ اسیروں کی رہائی تک جیل بھرو تحریک جاری رہے گی، آج بھی کہتے ہیں اگر ہمارے لاپتہ نوجوان مجرمانہ سرگرمیوں میں ملوث ہیں تو انہیں عدالتوں میں پیش کریں۔

اطلاعات کے مطابق شیعہ رہنماء کو پولیس نے کھارادر مسجد سے گرفتار کر کے لیاری کے بغدادی تھانے منتقل کردیا اور ابھی کوئی مقدمہ درج نہیں کیا گیا۔

شیعہ رہنماؤں کا کہنا ہے کہ اُن کے 100 سے زائد نوجوانوں کو جبر طور پر لاپتہ کردیا گیا ہے، نوجوانوں کی بازیابی کے لیے ہر در پر دستک دی تاہم کوئی شنوائی نہیں ہوئی جس کے بعد اس تحریک کو شروع کرنے کا فیصلہ کیا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top