The news is by your side.

Advertisement

شبلی فراز نے الیکشن کمشنر کی تقرری کا معاملہ سپریم کورٹ لے جانا غیر ضروری قرار دے دیا

اسلام آباد: چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کا معاملہ قائد ایوان سینیٹ شبلی فراز نے سپریم کورٹ لے جانا غیر ضروری قرار دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ میں قائد ایوان شبلی فراز نے کہا ہے کہ ہر معاملے کو عدالت لے جانا پارلیمنٹ کو کم زور کرنے کے مترادف ہے، ای سی پی چیف کے معاملے کو عدالت لے جانا غیر ضروری ہوگا۔

قائد ایوان سینیٹ کا کہنا تھا کہ آئینی معاملات عدالتوں میں لے جانے سے سیاسی نظام کم زور ہوگا، ہم پارلیمانی مسائل کو عدالت کی بہ جائے پارلیمان میں زیر بحث لانا چاہتے ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ 4 ممبرز میں سینئر ترین ممبر قائم مقام چیف الیکشن کمشنر ہوگا۔

یہ بھی پڑھیں:  اپوزیشن چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کا معاملہ سپریم کورٹ لے گئی

خیال رہے کہ اپوزیشن چیف الیکشن کمشنر کی تقرری کا معاملہ سپریم کورٹ لے گئی ہے، عدالت میں دی گئی درخواست میں کہا گیا ہے سپریم کورٹ ممکنہ آئینی بحران حل کرنے کے لیے مناسب فیصلہ کرے، ارکان کی تقرری کے لیے پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس ناموں پر غور و فکر کے بعد ختم ہو گیا، پارلیمانی کمیٹی میں اتفاق نہ ہونے کے بعد آرٹیکل 213 خاموش ہے، جس کی وجہ سے آئینی بحران پیدا ہو جائے گا۔

اسلام آباد ہائی کورٹ میں الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ممبران کی تعیناتی کے حوالے سے درخواست کی سماعت آج ہوگی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں