The news is by your side.

Advertisement

لال حویلی خالی کروائی تو میں وزیراعظم ہاؤس خالی کرواؤں گا، شیخ رشید

راولپنڈی : متروکہ وقف املاک بورڈ نے شیخ رشید کے زیر استعمال معروف تاریخی عمارت لال حویلی کو خالی کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے جس پر شیخ رشید نے سخت احتجاج کرتے ہوئے حکومت کو غیر آئینی کام سے باز رہنے کی تاکید کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق راولپنڈی میں واقع لال حویلی کو تاریخی ورثہ قرار دے کر متروکہ وقف املاک بورڈ نے حکومت کے زیر انتظام لینے کا فیصلہ کر لیا ہے جس کے بعد اس عمارت کو خالی کرانے کا حتمی فیصلہ کرلیا گیا ہے۔

لال حویلی کی وجہ شہرت اس کی سیاسی سرگرمیوں کا مرکز ہونا ہے یہ عمارت کافی برسوں سے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید کے زیر استعمال ہے جو نہ صرف ان کی رہائش گاہ ہے بلکہ ان کی جماعت کا مرکزی دفتر بھی ہے اور یہاں عوامی و حزب اختلاف کی سیاست کی جاتی رہی۔

عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید کا کہنا تھا کہ یہ عمارت ہماری ہے حکومت پانچ مرلے جائیداد کو یہ پانچ کنال کہتے ہیں اگر لال حویلی پر پنگالیا تو پورے پاکستان میں پنگالوں گا۔

انہوں نے حکومت کو متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ خودکش سیاستدان ہوں حکومت لال حویلی خالی کروانا چاہتی ہے تو آئیں لال حویلی خالی کرائیں پھر میں وزیراعظم ہاؤس خالی کرانے نکلوں گا۔

واضح رہے تقسیم ہند سے قبل یہ عمارت ایک ہندو خاتون کی ملکیت تھی جو ہندوستان ہجرت کر گئی تھیں اس کے بعد 1980 سے یہ عمارت شیخ رشید کی رہائش گاہ اور سیاست کا مرکز بنی رہی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں