The news is by your side.

Advertisement

سرفراز کو اب ٹیم میں بھی نہیں رکھا جائے گا، شعیب اختر

راولپنڈی: قومی کرکٹ ٹیم کے سابق فاسٹ باؤلر شعیب اختر نے کہا ہے کہ سرفراز کو اپنی کارکردگی کی وجہ سے ہٹایا گیا، اب اُسے ٹیم سے بھی باہر کردیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق اپنے یوٹیوب چینل پر شعیب اختر نے ویڈیو اپ لوڈ کی جس میں انہوں نے کہا کہ سرفراز کو میں کب سے بول رہا تھا مگر اُس نے ہماری بات کو نہ مانا اور اب نتیجہ سامنے ہے۔

شعیب اختر نے انکشاف کیا کہ ’مجھے لگتا ہے کہ اب سرفراز کو ٹیم میں جگہ نہیں دی جائے گی، رضوان کو ٹیسٹ کرکٹ اور کامران اکمل کو ون ڈے میں شامل کرلیا جائے گا‘۔ اُن کا کہنا تھا کہ سرفراز نے اچھی کارکردگی کی بدولت ٹیم میں جگہ بنائی مگر چیمئنز ٹرافی کے بعد سے وہ کہیں کھو گئے تھے، دو سال میں نے ایک ڈرا ہوا خوفزدہ کپتان دیکھا جو مکی آرتھر کے کہیں نیچے دب کر  رہ گیا تھا، اُسے بہت سمجھایا اوپر کے نمبر پر آکر ذمہ دارانہ بیٹنگ کرو۔

مزید پڑھیں: سرفراز احمد سے کپتانی واپس لینے کا معاملہ، معین خان نے نیا پینڈورا باکس کھول دیا

شعیب اختر کا کہنا تھا کہ دو سال تک سرفراز کو سمجھایا اُس پر تنقید کی کہ اور سمجھایا کہ اگر پرفارمنس نہیں دو گے تو ٹیم میں جگہ نہیں بنے گی، ہم دیکھ رہے تھے کہ جن حالات سے گزر چکے وہ اب سرفراز بھی دیکھے گا کیونکہ جب کپتان پرفارمنس نہیں دے گا تو مسئلہ ہوگا۔

فاسٹ باؤلر کا کہنا تھا کہ سرفراز کو ٹی 20 کی کپتانی سے نہیں ہٹانا چاہیے تھا کیونکہ اُن کی قیادت میں پاکستان نے 35 میچ کھیلے جن میں سے اکثر میں فتح ہوئی، میرے حساب سے یہ زیادتی ہے مگر پی سی بی اور نئی مینجمنٹ سرفراز کو ٹیم میں رکھنا نہیں چاہتی اور مجھے اب اُن کے مستقبل کا علم نہیں‌ ہے۔

کراچی اور پنجاب کے تاثر پر شعیب اختر کا کہنا تھا کہ ایک پنجابی ہونے کی حیثیت سے سرفراز کو ہمیشہ مشورے دیے، ڈرپوک کرکٹرز خود اپنے زوال کے ذمہ دار ہیں، ٹیم میں اب کراچی کا صرف ایک کھلاڑی اسد شفیق باقی ہے مگر وہ بھی ڈرپوک ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں