The news is by your side.

Advertisement

یورواسٹارٹرین: دہشتگرد باآسانی لندن تک کا سفر کرسکتے ہیں

لندن: برطانوی صحافی گلین نےیورواسٹار ٹرین پربغیرکسی شناختی دستاویز دکھائےبرسلز سےلندن تک کاسفرکرکےیورپین بارڈرسیکیورٹی میں موجود خامیوں کاانکشاف کیا ہے۔

تفصیلات کےمطابق یورپ کے بارے میں عام طور پر تصور پایاجاتا ہےکہ وہاں کا سیکیورٹی نظام دنیا کابہترین نظام ہے لیکن حال ہی میں ڈیلی میل اخبارکے رپورٹر کی جانب سےکی جانے والی تحقیق نے یورپین بارڈر سیکیورٹی پر بہت سے سوال اٹھا دیے ہیں۔

برطانوی اخبار ڈیلی میل کی جانب سے کی جانے والی تحقیق کے مطابق کوئی بھی جرائم پیشہ شخص یا دہشت گرد صرف ڈھائی یورو میں بغیر کسی جانچ پرٹال کے برطانیہ کے دارالحکومت لندن میں داخل ہوسکتاہے۔

uk-post-1

بیلجیئم کےشہر برسلز سے فرانس کے شہر للی تک کوئی بھی شخص بغیر کسی شناختی دستاویز کے ٹکٹ لےکر یوروٹرین کے ذریعے سفر کرسکتاہےاور بغیر کسی چیکنگ کے باآسانی لندن تک پہنچ سکتا ہے۔

برطانوی اخبار کے صحافی نے اس خامی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے بغیر کسی سیکیورٹی چیکنگ کےفرانس کے شہر برسلز سے لندن تک ایک ہفتے کے دوران دومرتبہ سفر کیا۔

uk-post-2

خیال رہےدہشت گردوں کی جانب سے پیرس اور برسلز میں دہشت گردی کے بڑے واقعات کےبعدیورپ فری زون سیکیورٹی کے حوالے سے شدید تشویش پائی جائی ہے لیکن حالیہ تحقیق نے سب کو چونکا دیا ہے کہ کوئی بھی دہشت گرد کس قدر آسانی سےسفر کرسکتاہے۔

برطانوی صحافی کی جانب سے سفر کے دوران ایک مسافر سے بات کی گئی جس نے حیران کن انکشاف کیا کہ وہ یوروٹرین پر اب تک 500مرتبہ لندن کا سفر کرچکاہے لیکن اس دوران اس سے صرف پانچ مرتبہ ہی پاسپورٹ دکھانے کو کہاگیا۔

uk-post-3

دوسری جانب یورواسٹار ٹرین انتظامیہ کی جانب سے کہا گیا ہےکہ ہر ملک میں متعلقہ حکام کی جانب سے سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے جاتے ہیں۔

واضح رہےکہ بارڈر سیکورٹی کےبجٹ میں گزشتہ تین سالوں کے دوران 120ملین یورو کی کمی گئی ہےجو 2012سے2013کے دوران 617ملین یورو سے کم ہوکر 2015سے2016میں 497ملین یورو ہوگیا ہے۔

uk-post-4

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں