The news is by your side.

Advertisement

دبئی: بغیر اجازت تصاویر یا ویڈیو بنانا جرم قرار

دبئی: متحدہ عرب امارات کے شہر دبئی میں بغیر اجازت کسی کی ویڈیو یا تصویر بنانا جرم قرار دے دیا گیا جس کی سزا پانچ لاکھ درہم جرمانہ اور ایک سال قید ہوگی۔

عرب میڈیا کے مطابق دبئی پولیس نے چند روز قبل روڈز اینڈ ٹرانسپورٹ اتھارٹیز(آر ٹی اے) کسٹمر کیئر سینٹر پر روتے ہوئے شخص کی ویڈیو بنانے پر ایک شخص کو گرفتار کرلیا ہے، ملزم نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر بھی ویڈیو جاری کردی تھی جو دیکھتے ہی دیکھتے وائرل ہوگئی تھی۔

آر ٹی اے نے کہا ہے کہ روتا ہوا شخص کار ٹیکسی کا ملازم نہیں اور نہ ہی اس کے نام پر کوئی بہت بڑے جرمانے رجسٹرڈ ہیں، مذکورہ شخص اپنے رشتے دار پر ہونے والے 20 ہزار درہم جرمانے کی معلومات لینے ہیڈ کوارٹرز آیا تھا جو کار ٹیکسی فرنچائز کا ڈرائیور تھا۔

آر ٹئ اے کے مطابق تحقیقات کی جارہی ہیں کہ ڈرائیور پر جرمانہ کیوں کیا گیا، ہم نے متعلقہ حکام پر زور دیا ہے کہ جس شخص نے ویڈیو بنا کر سوشل میڈیا پر وائرل کی اس کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے۔

دبئی پولیس نے بھی عوام کو خبردار کیا ہے کہ بغیر اجازت کسی کی بھی تصویر یا ویڈیو نہ بنائیں کیونکہ ایسا کرنا قانوناً جرم ہے۔

سائبر کرائم کے 2012ء کے فیڈرل ڈکری لا نمبر 5 کے مطابق جو بھی شخص کسی اور کی پرائیویسی میں دخل اندازی کرے گا اسے ایک لاکھ پچاس ہزار سے پانچ لاکھ درہم تک کے جرمانے کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے جبکہ اس کے ساتھ ایک سال قید کی سزا بھی دی جاسکتی ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں