The news is by your side.

Advertisement

پنجاب میں کرونا وائرس ایمرجنسی سے نمٹنے کے لیے وینٹی لیٹرز کی شدید قلت

لاہور: صوبہ پنجاب میں کرونا وائرس ایمرجنسی سے نمٹنے کے لیے وینٹی لیٹرز کی شدید قلت سامنے آ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب میں وینٹی لیٹرز کی قلت کا مسئلہ سامنے آ گیا ہے، دوسری طرف صوبے میں پبلک ہیلتھ ایمرجنسی کا نفاذ کیا جا چکا ہے۔

اطلاعات کے مطابق پنجاب کے اسپتالوں میں 10 کروڑ کی آبادی کے لیے صرف 882 وینٹی لیٹرز ہیں، پنجاب کی آبادی کے لحاظ سے 1 لاکھ 13 ہزار لوگوں کے لیے صرف 1 وینٹی لیٹر موجود ہے، لاہور کے 6 بڑے اسپتالوں میں صرف 406 وینٹی لیٹرز دستیاب ہیں۔

 میو اسپتال میں کورونا وائرس کا مشتبہ مریض دم توڑ گیا

پی ایم ڈی سی رولز کے مطابق ٹیچنگ اسپتالوں میں 5 ہزار وینٹی لیٹرز ہونے چاہئیں، دوسری طرف گنگا رام اسپتال میں 27، چلڈرن اسپتال میں صرف 99 وینٹی لیٹرز دستیاب ہیں، میو اسپتال میں 82، جناح اسپتال میں بھی صرف 78 وینٹی لیٹرز موجود ہیں، سروسز اسپتال میں 72 ، اور جنرل اسپتال میں 48 وینٹی لیٹرز موجود ہیں۔

پنجاب آنے والے 5 زائرین میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوگئی

خیال رہے کہ گزشتہ روز وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے کہا تھا کہ پنجاب کابینہ نے صوبے میں پبلک ہیلتھ ایمرجنسی کی منظوری دے دی ہے، ایک لاکھ لوگوں کے لیے ایک ہفتے کے اندر علاج کی سہولت گاہ قائم کی جا سکتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ محکمہ صحت کو ضروری سامان کے لیے 24 کروڑ کے فنڈز جاری کیے گئے ہیں، کرونا وائرس کی تشخیص کے لیے مزید 10 ہزار کٹس بھی منگوائی جا رہی ہیں۔

وزیر اعلیٰ پنجاب کرونا ہیلتھ ایمرجنسی کے پیش نظر اپنا ہیلی کاپٹر بھی محکمہ صحت کے حوالے کر چکے ہیں، ہیلی کاپٹر کو مریضوں کی منتقلی کے لیے استعمال کیا جائے گا۔ ادھر آج ڈاکٹر یاسمین راشد نے پریس کانفرنس میں پنجاب میں 6 کیسز کی تصدیق بھی کر دی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں