The news is by your side.

Advertisement

نگراں حکومت آتے ہی ملک میں بجلی کے بحران میں اضافے کا خدشہ

لاہور: مسلم لیگ ن کی حکومت کا دور ختم ہونے کے بعد نگراں حکومت کے آتے ہی ملک میں بجلی کے بحران میں اضافے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق تیل کی قیمتوں میں حالیہ اضافے کے باعث بجلی بنانے والے پاور ہاؤسز کو تیل کی فراہمی میں کمی کا امکان ہے، جس سے بجلی کی پیداوار پر اثر پڑے گا۔

ذرائع نے کہا ہے کہ ملک میں بجلی کے مجموعی شاٹ فال میں اضافہ ہوگیا ہے، خیال رہے کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کہہ چکے ہیں کہ اگر اب بجلی کا بحران سامنے آتا ہے تو اس کی ذمے دار نگراں حکومت ہوگی۔

ذرائع کے مطابق بجلی کا مجموعی شارٹ فال 4560 میگا واٹ تک پہنچ گیا ہے، اس شاٹ فال کے اثرات ملک میں عوام کو لوڈ شیڈنگ میں اضافے کی صورت میں برداشت کرنے پڑیں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ملک میں اس وقت بجلی کی مجموعی طلب 23 ہزار 302 میگا واٹ ہے، پاور ہاؤسز اس طلب کو پوری کرنے میں ناکام ہیں جس کی وجہ سے لوڈ شیڈنگ کرنی پڑتی ہے۔

عمران خان کا نگراں حکومت سے لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کا مطالبہ


ملک میں بجلی کی طلب کے بر عکس بجلی کی مجموعی پیداوار صرف 18 ہزار 742 میگا واٹ ہے، خیال رہے کہ بجلی پیدا کرنے کے سلسلے میں مختلف ملکی اداروں کے مابین تنازعات بھی پیداوار میں کمی کا سبب ہیں۔

واضح رہے کہ بجلی کی طلب اور پیداوار میں بہت زیادہ فرق کے باعث اس وقت بڑے شہروں میں 6 اور دیہات میں 10 گھنٹے تک لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے۔

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ، پیٹرول 92روپے لیٹر تک جا پہنچا


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں