The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد : چڑیا گھر کے بیمار ریچھوں کو رہائی نہ مل سکی

اسلام آباد : وفاقی دارالحکومت کے مرغزار چڑیا گھر میں بد انتظامی کی وجہ سے وہاں موجود دو بیمار بھورے ریچھوں کی حالت قابل دید ہے لیکن عدالتی احکامات کے باوجود انہیں اردن منتقل نہیں کیا گیا۔

اسلام آباد کے چڑیا گھر میں موجود بیمار بھورے ریچھوں کی جوڑی ببلو اور سوزی کے جوڑے کو اردن منتقل کیا جانا تھا تاہم محکمہ جنگلی حیات اور وزارت موسمیاتی تبدیلی نے عین روانگی سے قبل این سی او سی ہونے کے باوجود ان کو بیرون ملک بھجوانے سے انکار کردیا۔

مالیائی بھورے ریچھوں کا یہ جوڑاببلو اور سوزی شدید نفسیاتی بیماری کا شکار ہے، عدالتی احکامات میں بھی کہا گیا تھا کہ یہ نایاب جانور شدید اذیت میں مبتلا ہیں، ان کی روانگی کے حوالے سے محکمہ وائلڈ لائف اسے اپنی انا کا مسئلہ نہ بنائے۔

اس سلسلے میں صدر پاکستان وائلڈ لائف فاؤنڈیشن ڈاکٹر اعجاز نے اے آر وائی نیوز کے پروگرام باخبر سویرا میں گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ جس وقت عدالتی حکم آی ااس وقت ان کی حالت بہتر نہیں تھی تاہم اب کافی حد تک بہتر ہوچکی ہے۔

اس لیے اسلام آباد وائلڈ لائف منجمنٹ بورڈ نے عدالت سے دوبارہ درخواست کی ہے کہ ان ریچھوں کو بھیجنے کے بجائے یہی رکھا جائے تو زیادی مناسب ہوگا۔

واضح رہے کہ یہ جوڑا کئی سالوں سے چڑیا گھر میں قید کی زندگی گزار رہا ہے، محکمہ جنگلی حیات نے انہیں مداری کرانے والوں سے بازیاب کروایا تھا جو ریچھوں سے کرتب کروا کر پیسے کماتے تھے اور وہ ان کے دانت بھی توڑ چکے تھے۔

گزشتہ ماہ میں بین الاقوامی تنظیموں نے کاوان ہاتھی کے ساتھ ساتھ ان ریچھوں کی دیکھ بھال بھی کی اور منتقلی کے انتظامات کیے۔ اس حوالے سے اسلام آباد ہائی کورٹ کا واضح حکم بھی موجود ہے جس کی روشنی میں محکمہ جنگلی حیات نے ریچھوں کے جانے کا این او سی بھی جاری کیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں