The news is by your side.

Advertisement

عدلیہ مخالف بیانات، چیف جسٹس کی لیگی رہنما صدیق الفاروق کو وارننگ

اسلام آباد: چیف جسٹس میان ثاقب نثار نے مسلسل عدلیہ مخالف بیانات دینے پر مسلم لیگ (ن) کے رہنما صدیق الفاروق کو توہین عدالت لگانے کی وارننگ دے دی۔

تفصیلات کے مطابق ایک اور ن لیگی رہنما کے سر پر توہین عدالت کی تلوار منڈلانے لگی ایک کیس کے دوران چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے کہا کہ صدیق الفاروق مسلسل عدالت کی توہین کر رہا ہے، یہ سلسلہ جاری رہا تو توہین عدالت لگا دیں گے۔

انہوں نے موقف اختیار کیا کہ صدیق الفاروق کی کیا قابلیت تھی جو متروکہ وقف املاک بورڈ کا چیئرمین لگایا گیا؟ نامناسب شخص کو چیئرمین لگایا گیا، وہ عدالت کے خلاف بول رہے ہیں باز نہ آئے تو توہین عدالت لگا دیں گے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ ساری زندگی ن لیگ کے پریس روم میں تراشے کاٹنے والا عدالت کے خلاف بول رہا ہے، مسلم لیگ (ن) کے دفتر میں بیٹھ کر زندگی گزار دی آج ان کا نمائندہ بن کر عدالت کے خلاف بول رہا ہے۔

دانیال عزیزکے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت 16 اپریل تک ملتوی

میاں ثاقب نثار نے استفسار کیا اربوں کھربوں کے معاملے میں سیاسی بنیاد پر تقرری کردی جاتی ہے، اب بھی کسی چہیتے کو  متروکہ وقف املاک بورڈ کا چیئرمین لگا دیں،کسی ن لیگ کے پولیٹیکل سیکریٹری کو بھی چیئرمین لگایا جاسکتا ہے۔

چیف جسٹس کا مزید کہنا تھا کہ بورڈ کا چیئرمین قابلیت کی بنیاد پر ہوناچاہیے، جوائنٹ سیکرٹری نے عدالت کو ایک سے ڈیڑھ ماہ میں نئے چیئرمین کی تعیناتی کی یقین دہانی کرادی ہے۔

نواز شریف سمیت 16ن لیگی رہنماؤں کیخلاف توہین عدالت کی درخواست کو سماعت کیلئے فل بنچ بھجوا دیا

خیال رہے کہ عدلیہ مخلاف بیانات دینے پر مسلم لیگ ن کے متعدد رہنماؤں کو توہین عدالت کا سامنا ہے جن میں مرکزی رہنما طلال چوہدری اور دانیال عزیر بھی شامل ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں