The news is by your side.

Advertisement

گزشتہ سال کے مقابلے میں مہنگائی میں نمایاں اضافہ

اسلام آباد : گزشتہ سال کے مقابلے میں مہنگائی میں نمایاں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ، ستمبر میں مہنگائی میں اضافے کے شرح گیارہ اعشاریہ چار فیصد رہی، جو گزشتہ مہینے کے مقابلے میں ایک اعشاریہ چھ فیصد زائد ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسٹیٹ بینک کا کہنا ہے کہ ستمبرمیں مہنگائی میں اضافہ دیکھنے میں آیا ، اگست میں یہ شرح دس اعشاریہ پانچ فیصد تھی، غذائی مہنگائی پندرہ فیصد اور غیر غذائی مہنگائی نواعشاریہ سات فیصد رہی۔

گزشتہ سال کے مقابلے میں ستمبر میں پیاز کی قیمتوں میں ایک سو نو فیصد، گیس کی قیمت میں ایک سو پندرہ فیصد، دال مونگ چھیالیس اعشاریہ سات فیصد، ڈاکٹر کی فیسوں میں سولہ فیصد اور موٹر فیول کی قیمت میں بائیس فیصد اضافہ ہوا۔

ٹماٹر، ایل پی جی اور بجلی کی قیمت میں کمی ریکارڈ کی گئی، حکومت نے گزشتہ ماہ افراط زر کی کلکیولیشن تبدیلی کی تھی، گیارہ اعشاریہ چار فیصد نئی کلکیولیشن سے ہی نکالا گیا ہے، ستمبرمیں افراط زر کی شرح مرکزی بینک کی توقعات کے مطابق ہے۔

اسٹیٹ بینک کا کہناہےکہ رواں مالی سال کی دوسری ششماہی میں مہنگائی میں کمی دیکھنے میں آئےگی۔

دوسری جانب پاکستان شماریات بیورو نے مہنگائی کے اعداد و شمار سے متعلق رپورٹ جاری کی تھی ، جس کے مطابق ستمبر 2018 کی نسبت ستمبر 2019 میں مہنگائی 11.37 فیصد بڑھی جب کہ جولائی تا ستمبر 2019 میں گزشتہ سال کی نسبت مہنگائی 10.08 فیصد بڑھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں