The news is by your side.

Advertisement

پاکستان اور ایران کے درمیان اہم یادداشتوں پر دستخط

پاکستان اور ایران کے درمیان سرحدی تجارتی مراکز کھولنے سے متعلق یادداشتوں پر دستخط کر دیے گئے۔

دورہ تہران پر موجود وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے ایرانی ہم منصب جواد ظریف کے ہمراہ ‏یادداشتوں پر دستخط کیے۔

پاکستان اور ایران کے بارڈر ایریاز میں 6 تجارتی مراکز کھولےجائیں گے۔ یہ مراکز بلوچستان اور ‏ایران کے صوبہ سیستان و بلوچستان کی سرحدپر قائم ہوں گے۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ تجارتی مراکز کا قیام دونوں ممالک کیلئےیکساں مفید ‏ہوگا، پاکستان اورایران کےشہریوں کیلئےیہ انتہائی موثراقدام ہے۔ ‏

بارڈر مارکیٹس کھولنےکی تجویز وزیراعظم عمران خان نے دی تھی۔

اس سے قبل پاکستانی سفارتخانےمیں افسران سےخطاب کرتے ہوئے شاہ محمودقریشی کا کہنا تھا ‏کہ ’اسپیکر ایرانی پارلیمنٹ کے ساتھ اسلامو فوبیا کے معاملے پر گفتگو ہوئی، مغرب میں شدت ‏پسندطبقہ اسلاموفوبیاکو ہوا دے رہا ہے‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’جلد ترکی کا دورہ کر کے ترک وزیر خارجہ سے اسلامو فوبیا کے حوالے سے ‏گفتگو کروں گا تاکہ ہم اس کی روک تھام کے لیے اقدامات کرسکیں اور اسلامی ممالک متحد ہوں’۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’ترک صدر اردگان اور وزیرخارجہ کے عقیدے سے واقفیت رکھتا ہوں، ان کی سوچ ، ‏ہماری سوچ سے مطابقت رکھتی ہے، مسلم امہ کیلئے سعودی عرب کی اہمیت سے سب واقف ‏ہیں‘۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ’مجھے وزیراعظم کےساتھ جلد سعودی عرب جانے کا موقع ‏ملےگا،سعودی قیادت کے ساتھ اسلامو فوبیا کے حوالے سے گفتگو ہوگی، ملکریہ علم اٹھائیں گے تو ‏پوری امہ ایک نکتے پر متفق ہوگی‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں