The news is by your side.

Advertisement

سکھ یاتریوں سے ملاقات نہ کرانے کا بھارتی الزام بے بنیاد ہے، ترجمان دفترخارجہ

اسلام آباد : دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر فیصل  نے بھارتی ہائی کمشنر کی جانب سے سکھ یاتریوں سے ملاقات نہ کرنے دینے کے الزام کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ حقائق کو توڑمروڑ کر پیش کرنے کی بھارتی کوشش قابل مذمت ہے۔

یہ بات انہوں نے اپنے حالیہ بیان میں کہی، تفصیلات کے مطابق پاکستانی دفتر خارجہ نے سکھ یاتریوں سے بھارتی ہائی کمشنر کی ملاقات نہ کرنے دینے کے الزام کی سختی سے تردید کردی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ بھارتی دفترخارجہ کے الزامات سراسر جھوٹ اور بےبنیاد ہیں، بھارتی ہائی کمشنر کو سکھ یاتریوں سے ملاقات کرنے سے بالکل نہیں روکا گیا، حقائق کو توڑ مروڑ کر پیش کرنے کی بھارتی کوشش قابل مذمت ہے۔

ترجمان دفترخارجہ  ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ بھارتی ہائی کمشنر کو سکھ برادری کے اجتماع میں شرکت کی باقاعدہ دعوت دی گئی تھی، سیکریٹری متروکہ وقف املاک بوڈر نے بھارتی ہائی کمشنر کو دعوت نامہ بھی بھیجا۔

ترجمان نے بتایا کہ بھارت میں بابا گرو نانک سے متعلق متنازعہ فلمیں ریلیز ہوئی تھیں جس پرسکھ برادری سراپا احتجاج تھی، صورتحال کی سنگینی کو مد نظر رکھتے ہوئے سیکریٹری بورڈ نے سیکیورٹی خدشے کے پیش نظر بھارتی ہائی کمشنر کو آمد مؤخر کرنے کی درخواست کی تھی۔

ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ مذہبی مقامات سے متعلق معاہدے کی خلاف ورزی کا بھارتی الزام حیران کن ہے اس برعکس بھارت نے خود دو مرتبہ پاکستانی زائرین کو ویزے جاری نہیں کیے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیاپر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں