The news is by your side.

Advertisement

سندھ کے 70 فیصد علاقوں‌ میں‌ مون سون بارشوں کا پانی نکالا جاچکا، وزیراعلیٰ‌ سندھ

لاڑکانہ: وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے اعتراف کیا ہے کہ سندھ کے 30 فیصد علاقوں میں مون سون کی بارش کا پانی تاحال موجود ہے۔

لاڑکانہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے اعتراف کیا کہ مون سون کی ہونے والی بارشوں کا پانی 70 فیصد علاقوں سے نکالا جاچکا ہے جبکہ بقیہ علاقوں سے نکالنے کے اقدامات بھی کیے جارہے ہیں۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’لوگ کہتےہیں کرونا واپس آگیا جبکہ میں سمجھتا ہوں وائرس کہیں گیا نہیں تھا، ہم نے بچوں کو محفوظ رکھنے کے لیے بروقت اسکول بندکئے،عوام ہرگز نہ سمجھیں کرونا ختم ہوگیا۔ اُن کا کہنا تھا کہ ’سندھ نے ایک دن میں سب سے زیادہ 8 ہزار کرونا ٹیسٹ کیے، گزشتہ ہفتے نئے کیسز رپورٹ ہوئے ہیں’۔

مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ ’ہم وزیراعظم عمران خان کے شکر گزار ہیں کہ انہیں کراچی کا خیال آگیا، عمران خان کو پورے سندھ کا دورہ کرنا چاہیے تھا مگر انہوں نے ایسا نہیں کیا‘۔

مزید پڑھیں: مون سون بارشیں، ضلع دادو میں بھی آرمی ٹیمیں رسیکیو آپریشن کو پہنچ گئیں

مراد علی شاہ نے وفاقی حکومت سے ایک بار پھر این ایف سی میں سندھ کا جائز حصہ فراہم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ’اگر ہمیں حصہ نہیں دیتے تو ٹیکس وصولی کا نظام ہی ہمارے حوالے کردیں‘۔

یاد رہے کہ دو ماہ قبل کراچی سمیت صوبے بھر میں مون سون کی شدید بارشیں ہوئیں تھیں جس کے بعد شہری علاقوں میں درمیانے جبکہ دیہی علاقوں میں بھی سیلاب آیا تھا۔ بارش کا پانی کئی علاقوں میں داخل ہوا تھا جس کی وجہ سے علاقہ مکین نقل مکانی پر مجبور ہوئے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں