The news is by your side.

Advertisement

سندھ اسمبلی: ساحلی علاقے سمندر برد ہونے سے بچائے جائیں، قرارداد منظور

کراچی : ساحلی علاقوں کو سمندر برد ہونے سے محفوظ رکھنے کے لیے سندھ اسمبلی میں ایک قرارداد متفقہ طور پر منظور کر لی گئی۔

تفصیلات کے مطابق ساحلی علاقوں کو سمندر برد ہونے سے بچانے کے لیے قرارداد پاکستان پیپلز پارٹی کی رکن سندھ اسمبلی خیرالنساء مغل کی جانب سے پیش کی گئی جسے حزاب اقتدار اور حزب اختلاف سے تعلق رکھنے والے اراکین اسمبلی نے متفقہ طور پرمنظور کر لیا۔


*دریائے سندھ بے قابو، لیہ میں زمین نگلنا شروع کردی


قرارداد کے متن میں سندھ حکومت سے کوسٹل ہائی وے تعمیر کرنے کی استدعا کی گئی ہے جب کہ ساحلی علاقوں میں مینگروز کے مزید درخت لگانے کی ضرورت پر بھی زور دیا گیا ہے تاکہ ساحلی علاقوں کو سمندر برد ہونے سے بچایا جاسکے۔


*خبردار! سمندری ساحلوں پرآباد شہرخطرے میں ہیں


قرار داد کے متن میں بتایا گیا ہے کہ کراچی سے زیرو پوائنٹ بدین تک لاکھوں ایکڑ زمین سمندر برد ہوچکی ہے اور یہ عمل تیزی سے جاری ہے اگر صحیح وقت پر درست اقدامات نہ اُٹھائے گئے تو کراچی و بدین کے کئی علاقے سمندر برد ہو سکتے ہیں جس سے کافی نقصانات کا احتمال ہے۔

واضح رہے کہ ماحولیاتی آلودگی، موسمی تغیرات اور تبدیلی کے باعث دنیا کا درجہ حرارت خطرناک حد کو چھو رہا ہے جب کہ گلیئشر کے بے وقت پگھلنے اور جنگلات کے کٹاؤ کے باعث زمین کا تحفظ خطرے میں پڑ گیا تھا اور کئی ساحلی علاقے سمندر برد ہونے لگے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں