The news is by your side.

Advertisement

بلدیاتی نظام سے متعلق سندھ حکومت کا بڑا فیصلہ

کراچی: سندھ حکومت نے لوکل گورنمنٹ ایکٹ2013میں ترمیم کا اصولی فیصلہ کرلیا ہے۔

ذرائع کے مطابق سندھ میں 2013ء کے لوکل گورنمنٹ ایکٹ کو ختم کرکے نیا بلدیاتی قانون لایا جائے گا، مجوزہ بلدیاتی نظام میں میونسپل فنکشنز اور ٹیکس وصولیوں کا نیا طریقۂ کار وضع کیا جائے گا۔

نئے بلدیاتی نظام کی تشکیل کیلئے وزیر بلدیات سندھ کی زیر صدارت اجلاس ہوا، جس میں اصولی فیصلہ کیا گیا کہ ٹاؤنز سطح پربلدیاتی نظام لایا جائے، سندھ کابینہ کے سینئر ارکان بلدیاتی قانون پر سفارشات تیار کررہے ہیں۔

ذرائع کے مطابق پیپلزپارٹی کی اعلی قیادت بلدیاتی اداروں کو مالی و انتظامی اختیارات دینا چاہتی ہے جبکہ مجوزہ بلدیاتی قانون میں بعض بلدیاتی کونسلز کو ختم کرنے کی بھی تجویز بھی زیر غور ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ‘بلدیاتی ادارے فعال’، پنجاب حکومت نے نوٹی فیکیشن جاری کردیا

دوسری جانب وفاقی حکومت نے نئے مقامی حکومتوں کے نظام کا ڈرافٹ تیار کرلیا جس کے مطابق پہلے مرحلے میں وفاق، پنجاب اور خیبر پختونخواہ کے اضلاع میں انتظامی سربراہ مئیر جب کہ تحصیل کا سربراہ ڈپٹی میئر ہوگا جن کا انتخاب براہ راست کرنے کی تجویز ہے۔

نئے نظام کے تحت پولیس اور ضلعی انتظامیہ میئر کے ماتحت ہوگی اور ضلع کے مالی اختیارات بھی میئر کے پاس ہوں گے، ضلع کے پولیس اور انتظامی سربراہ کی کارکردگی رپورٹ لکھنے کا اختیار مئیر کو ہوگا۔

صوبائی وزیراعلیٰ اور وزراء نئے مقامی حکومتوں کے نظام میں مداخلت نہیں کرسکیں گے اور ضلعی حکومتیں مالی طور پر خودمختار ہوں گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں