The news is by your side.

Advertisement

کورونا کے پھیلاؤ کا خدشہ ، سندھ میں برطانیہ سے آنے والوں کا ڈیٹا جمع کرنے کا فیصلہ

کراچی : وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیرصدارت اجلاس میں برطانیہ سے آنے والوں کا ایک ماہ کا ڈیٹا جمع کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیرصدارت کورونا ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا، جس میں بریفنگ دیتے ہوئے بتایا گیا سندھ میں ایک ملین آبادی پر68877 ٹیسٹ کیے جا رہے ہیں، اس وقت تک کل 3.3 ملین ٹیسٹ ہوچکے ہیں جبکہ کل 8913 ٹیسٹ کئے گئے جن میں2.7 فیصد یعنی 237 کیسز ظاہر ہوئے۔

اجلاس میں بتایا گیا کہ سندھ میں 664 آئی سی یو بیڈز اور وینٹ کا انتظام ہے، 1872ایچ ڈی یو بیڈز اور 1374لو فلو آکسیجن بیڈز موجود ہیں ، اسوقت تک 265916 کیسز  ہوچکے جن میں 256384 صحتیاب ہوئے ، جبکہ صوبے میں کل 4504 اموات ہوچکی ہیں جوکیسزکا1.7 فیصد ہے۔

بریفنگ میں کہا گیا ہے کہ سندھ میں مثبت تناسب 26 مارچ سے یکم اپریل تک 2.6 سے 2.66 رہا ، کراچی میں ڈائریکشن ریشو4.63 فیصد، حیدرآبادمیں 5 فیصد اور باقی اضلاع میں 1.57 فیصد ہے جبکہ ڈبلیو ایچ او نمائندہ نے بتایا کہ پاکستان میں 11.21 فیصد مثبت کیسز ہیں۔

اجلاس میں سندھ میں برطانیہ سے آنے والوں کا ایک ماہ کا ڈیٹا جمع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ، وزیراعلیٰ سندھ مرادعلی شاہ نے کہا لاک ڈا ؤن نہیں چاہتے، ہم صرف بین الصوبائی ٹرانسپورٹ کو2 ہفتےبند کرنا چاہتے ہیں۔

مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ بین الصوبائی ٹرانسپورٹ بند ہونے سے تیسری لہر کاپھیلاؤ رک سکتا ہے، ہم پورٹ ایکٹوٹی، گوڈزٹرانسپورٹ جاری رکھنا چاہتے ہیں،  اکیلے بین الصوبائی ٹرانسپورٹ بند نہیں کر سکتے یہ قومی فیصلہ ہونا چاہئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں