The news is by your side.

پی ایس ایل فائنل پر حکومت کا شٹل سروس چلانے کا اعلان

کراچی : وزیراعلی سندھ نے پی ایس ایل کے فائنل کے دن ڈبل سواری پر پابندی کی تجویز مسترد کردی اور ساتھ ہی عوام کیلئے شٹل سروس چلانے کا اعلان کردیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زیرصدارت پی ایس ایل فائنل کے انتظامات پر اجلاس ہوا، اجلاس پی ایس ایل فائنل کے انتظامات کا جائزہ لیا گیا۔

حکومت سندھ نے پی ایس ایل کے فائنل پر شٹل سروس چلانے کااعلان کیا اور 300گاڑیوں پر مشتمل شٹل سروس چلانے کی منظوری دیدی، شٹل سروس کےسینتالیس سینٹرزہوں گے۔

وزیراعلیٰ سندھ نے ڈبل سواری پر پابندی کی تجویز مسترد کرتے ہوئے کہا کہ چاہتا ہوں نوجوان پی ایس ایل فائنل کو انجوائے کریں، تفریح چھیننا نہیں چاہتا۔

اجلاس میں وزیراعلیٰ سندھ نے ہدایت کی کہ شہر کی خوبصورتی کا کام کراچی شہر کے معیار مطابق ہو، پارکنگ سے اسٹیڈیم اور جہاں بند سڑکوں تک شٹل سروس کے لیے بسیں چلائی جائیں۔

مراد علی شاہ نے مزید کہا کہ پارکنگ ایریازمیں واش روم، پینے کے پانی کی سہولتیں ہونی چاہیے، ضروری آلات سے لیس موبائل ایمبولینس کا بندوبست بڑی تعداد میں کیا جائے اور جیسے ہی میچ ختم ہو 30 منٹس کا میوزیکل پروگرام بھی شروع کیا جائے۔

جام خان شورو نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ اسٹیڈیم کی جانب جانے والے راستوں پر بڑی لائٹیں لگارہے ہیں، سی سی ٹی وی کیمراز پورے علاقوں میں نصب کیے گئے ہیں جبکہ عوامی بیت الخلاء بنائے جارہے ہیں اور پارکنگ ایریاز میں بڑی اسکرین لگوائیں تاکہ ڈرائیوز بھی میچ دیکھ سکیں۔

انکا کہنا تھا کہ غریب نواز فوٹبال گراؤنڈ، حکیم سعید پلے گراؤنڈ، اوپن گراؤنڈ متصل وفاقی اردو یونیورسٹی میں پارکنگ بنائی جارہی ہے، کچھ پارکنگ 1کلو میٹر سے بھی زیادہ ہیں۔

خیال رہے کہ ڈبل سواری پرپابندی کی تجویز سندھ پولیس کی جانب سے دی گئی تھی۔


مزید پڑھیں : سندھ حکومت کا پی ایس ایل فائنل کیلئے فری ٹرانسپورٹ چلانے کا اعلان


یاد رہے کہ اس سے قبل سندھ کے وزیر اطلاعات سید ناصر حسین شاہ نے کراچی والوں کو خوشخبری سناتے ہوئے کہا تھا کہ پی ایس ایل فائنل کیلئے شہریوں کیلئے فری ٹرانسپورٹ چلائیں گے۔

واضح رہے کہ پاکستان سپر لیگ 2018 کا سیمی فائنل 20 اور 21 مارچ کو لاہور میں جبکہ فائنل 25 مارچ بروز اتوار کو کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں کھیلا جائے گا، وقت کا تعین فی الحال نہیں کیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ کراچی میں کئی سال بعد کرکٹ کا کوئی بین الاقوامی ایونٹ منعقد ہونے جارہا ہے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں