The news is by your side.

Advertisement

سندھ حکومت نفرتوں کا جال پھیلا رہی ہے، کارکردگی کی بات نہیں کرتی: فردوس شمیم

کراچی: سندھ اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر فردوس شمیم نقوی نے کہا ہے کہ سندھ حکومت نفرتوں کا جال پھیلا رہی ہے، کارکردگی بات نہیں کرتی، انھوں نے جو پیسے خود جمع کرنے تھے وہ چالیس فی صد کم ہوئے۔

تفصیلات کے مطابق پی ٹی آئی سندھ کے رہنما فردوس شمیم نے صوبائی حکومت سندھ پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ صوبے میں نفرتوں کا جال پھیلایا جا رہا ہے، یہ کارکردگی کی بات کیوں نہیں کرتے، مراد علی شاہ کو شکایت ہے کہ وزیر اعظم نے ان سے ہاتھ نہیں ملایا، جھوٹ اتنا بولو جتنا ہضم ہو سکے۔

فردوس شمیم نے کہا کہ دور نہیں جب میں شہر کے مسائل کے حل کے لیے ہائی کورٹ چلا جاؤں، اور ہائی کورٹ میں کہوں کہ مرکز شہر کے لیے اپنا حق ادا کرے۔

انھوں نے کہا کہ کسی کے پاس سے 35 تولے سونا نکلے تو کیا وہ کرسی پر بیٹھنے کا حق دار ہے؟ ہم نہیں کہتے کہ آرٹیکل 62،63 لاگو ہو، ورنہ سندھ اسمبلی خالی ہو جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں:  سندھ کو اسکیموں میں جائز حصہ نہیں دیا گیا: وزیر اعلیٰ سندھ کی این ای سی فیصلوں پر تنقید

پی ٹی آئی رہنما کا کہنا تھا کہ اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کے خلاف کیس دائر کیا گیا ہے، کیا وہ نام صاف کیے بغیر اسپیکر کی کرسی پر بیٹھنا چاہیں گے؟ علیم خان کے خلاف انکوائری شروع ہوئی تو انھوں نے عہدہ چھوڑ دیا۔

فردوس شمیم نقوی نے کہا کہ 11 جون کو حکومت پاکستان بجٹ پیش کرے گی، اس کے بعد 12 جون کو شیڈو بجٹ انصاف ہاؤ س میں پیش کیا جائے گا۔ مزید کہا کہ ملک میں صدارتی نظام آنے کی بات درست نہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں